قومی

نواز شریف سے متعلق عدالتی فیصلے کا جائزہ لیا جائے، وزیراعظم کی ہدایت

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے حکومتی قانونی ٹیم کو ہدایت کی ہے کہ وہ نوازشریف سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کے تفصیلی فیصلے کا جائزہ لے کر رپورٹ پیش کرے۔

وزیراعظم عمران خان اور حکومتی قانونی ٹیم کے درمیان رابطہ ہوا ہے، وزیراعظم نے قانونی ٹیم کو ہدایت کی ہے کہ نواز شریف سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کے تفصیلی فیصلے کا جائزہ لیا جائے اور قانونی ٹیم فیصلے کا جائزہ لے کر کابینہ میں رپورٹ پیش کرے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ نوازشریف سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے پر حکومتی لائحہ عمل کابینہ اجلاس میں طے کیا جائے گا اور فیصلے پر حکومتی حکمت عملی آئندہ کابینہ اجلاس میں طے ہوگی۔

نواز شریف سے متعلق عدالتی حکم چیلنج کرنے کا فیصلہ کابینہ کرے گی، اٹارنی جنرل

اسلام آباد: اٹارنی جنرل انور منصور کا کہنا ہے کہ لاہور ہائی کورٹ کا یہ عبوری حکم نامہ ہے تام عدالتی حکم چیلنج کرنے کا فیصلہ کابینہ کرے گی۔

اسلام آباد میں وزیراعظم کے معاون خصوصی احتساب شہزاد اکبر اور اٹارنی جنرل انور منصور خان نے پریس کانفرنس کی، اس دوران شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ ماضی میں ہونے والی وعدہ خلافی ہمارے سامنے ہیں، سپریم کورٹ سے یہ صادق اور امین نہ ہونے کا سرٹیفکیٹ لے چکے ہیں، ان کے 2 صاحب زادے اور ان کے سمدھی بھی مفرور ہوچکے ہیں لہذا انڈیمنٹی کی شرط ماضی کو سامنے رکھتے ہوئے رکھی گئی جب کہ عدالت نے انڈیمنٹی بانڈ کی جگہ بیان حلفی رکھ دیا۔

شہزاد اکبر نے کہا کہ سزا یافتہ مجرم کا نام ای سی ایل سے نہیں نکالا جاسکتا لہذا انسانی ہمدردی کی بنیاد پر ایک بار باہر جانے کی اجازت دی، کابینہ کے فیصلے میں 4 نکات تھے، فیصلہ کیا گیا کہ ایک دفعہ اجازت مخصوص مدت کے لیے ہوگی اور مدت پوری ہونے پر واپس آئیں گے، حکومت پر لازم تھا کہ ان کی واپسی یقینی بنائے  کیوں کہ ماضی میں بھی یہ وعدہ خلافی کرچکے ہیں۔

شہزاد اکبر نے کہا کہ لاہور ہائی کورٹ نے کابینہ کے فیصلے کو ہی برقرار رکھا ہے، انڈیمنٹی کی شرط کو معطل کیا گیا مسترد نہیں، بیان حلفی پر عمل درآمد نہ کرنے پر توہین عدالت کا کیس بن سکتاہے اور اب واپس نہ آئے تو یہ عدالت کے مجرم ہوں گے۔

اٹارنی جنرل انور منصور خان نے کہا کہ ان کا ماضی ٹھیک نہیں اس لئے عدالت نے بیان حلفی لیا، عدالت نے 4 ہفتے کا وقت دیا ہے، توسیع کے لیے انہیں دوبارہ عدالت جانا پڑے گا، نوازشریف کی ضمانت کی تاریخ سے 4 ہفتے کا وقت شروع ہوگیا، جب کہ شورٹی بانڈز کا معاملہ ختم نہیں ہوا بلکہ اس حوالے سے عدالت فیصلہ کرے گی۔

اٹارنی جنرل کا کہنا تھا کہ کابینہ کی 3 شرائط میں سے 2 عدالت نے مان لی ہیں، عدالت نے 5 سوال بھی رکھ دیے ہیں، سزا معطلی کا مطلب سزا ختم ہونا نہیں، عدالتی فیصلے کے مطابق نوازشریف علاج کراکے واپس آجائیں گے۔

اٹارنی جنرل انور منصور کا کہنا تھا کہ لاہور ہائی کورٹ کا یہ عبوری حکم نامہ ہے، ابھی عدالت نے میرٹ پر فیصلہ نہیں سنایا بلکہ انسانی ہم دردی کی بنیاد پر کیا، تحریری بیان تو زیادہ اہم ہے، عدالتی فیصلہ چیلنج کرنے کا فیصلہ کابینہ کرے گی، کل تک فیصلہ کریں گے کیا پچھلی اجازت پر ہی بیرون ملک بھیجیں گے۔

نواز شریف منگل کو بیرون ملک علاج کے لیے روانہ ہوں گے

لاہور: مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف منگل کو بیرون ملک علاج کے لیے روانہ ہوں گے۔

ترجمان پاکستان مسلم لیگ (ن) مریم اورنگزیب کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف منگل کو بیرون ملک علاج کے لیے روانہ ہوں گے اور انہیں لے جانے کے لیے ایئر ایمبولینس منگل کی صبح لاہور پہنچے گی، ڈاکٹرز نے نواز شریف کا آج صبح پھر تفصیلی معائنہ کیا ہے، اسٹیرائڈ کی ہائی ڈوز ز دینے کا عمل جاری ہے تاکہ پلیٹ لیٹس کی مقدار سفر کے قابل ہو سکے جب کہ ہائی بلڈ شوگر، ہارٹ اور دیگر طبی خطرات کو کم سے کم سطح پر لانے کے لیے بھی ادویات دی جا رہی ہیں۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ ڈاکٹرز ایسی محفوظ طبی حکمت عملی پر کاربند ہیں جس سے نواز شریف بحفاظت سفر کر سکیں تاہم دعا کریں کہ نواز شریف کا سفر بخیر رہے اور اللہ تعالی ان کو صحت کاملہ عطا فرمائے۔

نواز شریف کی عدم موجودگی میں ان کا مشن جاری رکھیں گے، شہباز شریف

لاہور: مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف کا کہنا ہے کہ حکومتی اتحادی جماعتوں نے دشمنی کی سیاست کی بجائے مفاہمت اور انسانی بنیادوں کی سیاست کو فروغ دیا ہے۔

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے مسلم لیگ (ن) کے قائد نوازشریف سے جاتی امرا میں ملاقات کی جس میں مریم نواز بھی موجود تھیں، شہباز شریف نے نواز شریف سے ان کی طبعیت دریافت کی اور ڈاکٹر عدنان نے نواز شریف کی صحت کی صورتحال کے حوالے سے شہباز شریف کو آگاہ کیا۔ شہباز شریف نے نواز شریف کی منگل کے روز بیرون ملک روانگی کے حوالے سے بھی مشاورت کی۔

بعد ازاں اپنے بیان میں شہباز شریف کا کہنا تھا کہ میاں نوازشریف کے لیے نیک خواہشات اور ہمدردی کا اظہار کرنے پر حکومتی اتحادی (ق) لیگ، ایم کیو ایم کا شکریہ ادا کرتے ہیں، چوہدری شجاعت حسین، چوہدری پرویزالہی اور چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کے بھی شکر گزار ہیں، اے این پی اور پیپلزپارٹی کے بھی بے حد مشکور ہیں جہنوں نے نوازشریف کے لئے نیک خواہشات اور جلد صحتیابی کے لئے پیغامات بھجوائے۔

شہباز شریف نے کہا کہ تمام اتحادی جماعتوں نے انسانی ہمدردی کی مخالفت کرنے والوں کی حوصلہ شکنی کی ہے، میاں نوازشریف کی صحت پر ان تمام سیاسی جماعتوں نے انسانیت سے ہمدردی کا ثبوت دیا ہے، پاکستان کے 22 کروڑ عوام ، تمام اپوزیشن کی جماعتوں اور حکومتی اتحادیوں جماعتوں کی جانب سے نوازشریف کی جلد صحتیابی کےلئے دعا کی ان کے مشکور ہیں۔

شہباز شریف نے مزید کہا کہ نوازشریف کی ملک و قوم کے لیے گراں قدر خدمات ہیں، مسلم لیگ (ن) نواز شریف کی پاکستان میں عدم موجودگی پر ان کو مشن کو جاری رکھے گی۔

نواز شریف کی’’مجھے کیوں نکالا‘‘کی گردان اب ختم ہو جائے گی، فردوس عاشق اعوان

اسلام آباد: معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے کہ امید کرتے ہیں کہ نواز شریف کی ’’مجھے کیوں نکالا‘‘ کی گردان اب ختم ہو جائے گی۔

اپنی ٹوئٹ میں فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ نواز شریف کی صحت کے لئے دعا گو ہیں۔ امید ہے لندن جانے کے بعد ان کے ترجمان، فیملی اور ڈاکٹرز پاکستانی عوام کو ان کی صحت کے بارے میں اسی طرح لمحہ بہ لمحہ آگاہ رکھیں گے جیسے ابھی رکھا جا رہا ہے۔امید کرتے ہیں کہ نواز شریف کی ’’مجھے کیوں نکالا‘‘ کی گردان اب ختم ہو جائے گی۔

معاون خصوصی نے کہا کہ عدالت کے فیصلے میں 80 فیصد حکومتی موقف تسلیم کیا گیا ہے۔لاگو شرائط عدالت کی جانب سے معطل کی گئی ہیں انہیں مسترد نہیں کیا گیا ۔ ثابت ہوتا ہے کہ حکومت کا فیصلہ اصولی اور قانون کے عین مطابق تھا۔ امید ہے مٹھائیاں بانٹنے والے پانامہ کے فیصلے کی طرح صف ماتم نہیں بچھائیں گے۔

ڈیرہ بگٹی این اے 259 میں دوبارہ پولنگ، شاہ زین بگٹی کی برتری برقرار

کوئٹہ: ڈیرہ بگٹی این اے 259 کے 29 پولنگ اسٹیشنز کے نتائج سامنے آگئے پہلے سے فتح یاب امیدوار شاہ زین بگٹی نے کی برتری تاحال برقرار ہے۔

این اے 259 ڈیرہ بگٹی کے 29 پولنگ اسٹیشنوں پر دوبارہ پولنگ صبح 8 بجے شروع ہوئی جو شام 5 بجے تک بلا تعطل جاری رہی، 18 پولنگ اسٹیشن کو انتہائی حساس قرار دیتے ہوئے سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے۔

اس نشست سے 2018ء کے الیکشن میں نواب زادہ شاہ زین بگٹی کامیاب ہوئے تھے تاہم آزاد امیدوار طارق کھیتران نے 29 پولنگ اسٹیشنز کے نتائج پر خدشات ظاہر کرتے ہوئے انہیں سپریم کورٹ میں چیلنج کیا تھا جواب میں سپریم کورٹ نے ان کے حق میں فیصلہ دیتے ہوئے الیکشن کمیشن آف پاکستان کو این اے 259 کے ان 29 پولنگ اسٹیشنز پر دوبارہ پولنگ کرانے کا حکم دیا تھا۔

اب 29 پولنگ اسٹیشنز کے غیر حتمی و غیر سرکاری نتائج سامنے آگئے ہیں جس کے مطابق نواب زادہ شاہ زین بگٹی 20 ہزار 895 ووٹ کے ساتھ پہلے نمبر پر ہیں جب کہ آزاد امیدوار نے 2054 ووٹ حاصل کیے ہیں۔

اب نہ امپائر کی انگلی اور نہ جعلی تبدیلی چلے گی، بلاول بھٹو زرداری

کراچی: پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ اب نہ امپائر کی انگلی اور نہ جعلی تبدیلی چلے گی، صرف اور صرف عوام کی مرضی چلے گی۔

بلاول بھٹو زرداری نے اپنی پرانی وڈیو ایک مرتبہ پھر ٹوئٹر پر شیئر کرتے ہوئے کہا کہ کہ میرا سوال آج بھی موجود ہے، میرا سوال سلیکٹڈ اور سلیکٹرز سے بھی ہے، سلیکٹڈ سے پوچھتا ہوں کہ کیا آپ کو ایمپائر کی انگلی پسند آئی، سلیکٹرز سے پوچھتا ہوں کہ کیا تبدیلی پسند آئی۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ اب نہ امپائر کی انگلی اور نہ جعلی تبدیلی چلے گی، اب صرف اور صرف عوام کی مرضی چلے گی۔

حکومت کو ایک سال میں بین الاقوامی سطح پر کئی کامیابیاں ملی ہیں، وزیر خارجہ

ملتان: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ حکومت کو ایک سال میں بین الاقوامی سطح پر کئی کامیابیاں ملی ہیں۔

ملتان میں تقریب سے خطاب کے دوران وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان کو بہت بڑے امتحان درپیش ہیں، ملک کو آزمائشوں کا سامنا ہے، میرااولین ایجنڈا ملک وملت اور اس وسیب کی خدمت ہے، حکومت کو ایک سال میں بین الاقوامی سطح پر بہت کامیابیاں ملی ہیں۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پیارے نبیﷺ کو ہر صفت عروج کے اعلیٰ ترین درجے پر عطا ہوئی، حضوراکرم ﷺکی زندگی کے مختلف پہلووَں سے ہمیں رہنمائی تلاش کرنی ہے، حضرت محمدﷺ نے ایک فلاحی ریاست قائم کی، اسی نظام کوآج یورپ اورپوری دنیا میں ویلفیئراسٹیٹ کے نام سے پیش کیا جاتا ہے، حکومت ریاست مدینہ کے حوالے سے ایسی ہی فلاحی ریاست کے لیے کوشاں ہے، صحت انصاف کارڈ اور احساس پروگرام فلاحی ریاست کی طرف پیش قدمی ہے۔

Google Analytics Alternative