قومی

بہن کی تعیناتی کے لیے نیکٹا کو لکھا گیا خط واپس لیں، وزیراعظم کا زرتاج گل کو حکم

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے وزیر مملکت برائے ماحولیات زرتاج گل کو اپنی بہن کی تقرری کے لیے نیکٹا کو لکھا گیا خط واپس لینے کا حکم دے دیا ہے۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی نعیم الحق کی جانب سے سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر کہا گیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے وزیر مملکت برائے ماحولیات زرتاج گل کو اپنی بہن کی تقرری کے لیے نیکٹا کو لکھا گیا خط واپس لینے کا حکم دیا ہے۔

نعیم الحق کا کہنا تھا کہ سفارش پر تقرریاں پی ٹی آئی کی روایات کے خلاف ہیں، پی ٹی آئی حکومت میں کوئی شخص اپنے عزیز و اقارب کو فائدہ نہیں پہنچا سکتا، تحریک انصاف نے ہمیشہ اقربا پروری کی مخالفت کی لہذا حکومتی شخصیات عہدوں کا فائدہ اٹھا کر رشتہ داروں کو نواز نہیں سکتیں۔

پی ٹی آئی نے ملک بھر کے تمام پارٹی عہدے تحلیل کردیے

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف نے ملک بھر کے تمام پارٹی عہدے تحلیل کردیے۔   

پی ٹی آئی نے ملک بھر کے تمام پارٹی عہدے تحلیل کردیے جس کے بعد چاروں صوبوں، گلگت بلتستان اور اسلام آباد میں پارٹی کے موجودہ ڈھانچے اور ونگز ختم کردیے گئے ہیں، ذرائع کا کہنا ہے کہ تحریک انصاف نے نئے پارٹی انتخابات کے پیش نظر ملک بھر کے عہدے تحلیل کیے۔

تحریک انصاف کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق چیئرمین، چیف آرگنائزر، وائس چیئرمین اور سیکرٹری جنرل سمیت پارٹی کے سیکرٹری خزانہ، سیکرٹری اطلاعات اپنے عہدوں پر کام جاری رکھیں گے۔

عوام کو شش و پنج کی ضرورت نہیں، عید 5 جون کو ہی ہوگی، فواد چوہدری

اسلام آباد: وزیر سائنس اور ٹیکنالوجی فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ عوام کو شش و پنج کی ضرورت نہیں، عید 5 جون کو ہی ہوگی۔

ایک انٹرویو میں وزیر سائنس اور ٹیکنالوجی فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ عوام کو شش و پنج کی ضرورت نہیں، عید 5 جون کو ہی ہوگی، رویت ہلال کمیٹی بھی یہی فیصلہ کرے گی، پرانے وقتوں میں چھتوں پر جاکر اور اب موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرکے کمرے میں بیٹھ کر چاند دیکھا جا سکتا ہے۔

دوسری جانب وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے اپنی ٹوئٹ میں کہا ہے کہ نا تو پارٹی میں کوئی اختلاف ہے نہ ہی حکومت کہیں جا رہی ہے، ہمارا اتفاق رائے ہے کہ پاکستان میں اگر جمہوری نظام کو کامیاب ہونا ہے تو عمران خان کی کامیابی ضروری ہے، اگر ہم نظر دوڑائیں کہ ہمارے ساتھ آزاد ہونے والے ممالک آج کہاں کھڑے ہیں تو ہمیں احساس ہوگا کہ ہم نے اس عرصے میں کیا کھویا اور کیا پایا۔

فواد چوہدری نے مزید کہا کہ ملک کے سول ادارے مکمل طور پر تباہ ہیں، جس ادارے کا جائزہ لیں تو پتا چلےگا کہ اقربا پروری، سفارش اور میرٹ کے اصولوں کو بالائے طاق رکھ کر ان اداروں سے کھلواڑ کیا گیا، آئندہ ایک 2 برسوں میں ان اداروں میں بہتری کی کوئی توقع نہیں، وزیراعظم عمران خان کو ایک ریزہ ریزہ نظام ملا ہے وہ اس نظام کو کھڑا کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

ساہیوال میں 5 نومولود کی موت دل ہلا دینے والا واقعہ ہے، مریم نواز

لاہور: پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہے کہ ساہیوال کے اسپتال میں 5 نومولود بچوں کی موت دل ہلا دینے والا واقعہ ظلم ہے جس کا سبب مجرمانہ غفلت ہے۔

پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ ساہیوال کے اسپتال میں 5 نومولود بچوں کی موت دل ہلا دینے والا واقعہ ظلم ہے جس کا سبب مجرمانہ غفلت ہے۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا تھا کا اپنی ذمہ داریوں سے غافل نااہل حکمرانوں کو کون جھنجھوڑے اور بتائے کہ ساہیوال کے اسپتال میں ہونے والی اموات کے ذمہ دار وہ ہیں اور اس غفلت کا جواب ان کو دنیا اور آخرت دونوں میں دینا ہوگا۔

مریم نواز نے کہا کہ سرکاری خرچ پر عمرہ میں مصروف جعلی حکمرانوں کو اس وقت دل خراش واقعے پر یہاں موجود ہونا چاہیے تھا، کہا جارہا ہے کہ جاں بحق ہونے والے بچوں کی تعداد 5 سے کہیں زیادہ ہے مگر چھپایا جارہا ہے، کیا حکمرانوں کی اپنی کوئی اولاد نہیں ہے، اگر ہے تو آپ کا احساس کہاں سویا ہوا ہے۔

خیبرپختونخواحکومت کا یوٹرن؛ مشیروں اور معاونین کو وزراء کا درجہ دینے کا اعلامیہ واپس

پشاور: خیبرپختونخوا حکومت نے 3 مشیروں اور 2 معاونین خصوصی کو صوبائی وزراء کا درجہ دینے کا اعلامیہ 5 روز بعد واپس لے لیا جب کہ وزیر کا درجہ واپس لینے کا اعلامیہ یکم جون کی تاریخ میں جاری کردیا گیا ہے۔

وزیراعلی خیبرپختونخوا محمود خان کے 3 مشیروں مشیر برائے قبائلی اضلاع اجمل خان وزیر، مشیربرائے ابتدائی وثانوی تعلیم ضیاءاللہ بنگش اور مشیر برائے انرجی اینڈ پاور حمایت اللہ خان شامل جبکہ 2 معاونین خصوصی میں عبدالکریم خان اور کامران خان بنگش کو وزیر کے برابر درجہ دینے کا اعلامیہ 27 مئی کو جاری کیا گیا تھا لیکن حکومت نے اس معاملے پر یوٹرن لیتے ہوئے  اعلامیہ واپس لے لیا۔

محکمہ اسٹیبلشمنٹ اینڈ ایڈمنسٹریشن کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیہ کے مطابق 3 مشیران اجمل وزیر، ضیاء اللہ بنگش اور حمایت اللہ جبکہ 2 معاون خصوصی کامران بنگش اور کریم خان کو وزیر کا درجہ دینے کا اعلامیہ واپس لے لیا۔

اس حوالے سے جب معاون خصوصی کریم خان سے رابطہ ہوا تو ان کا کہنا تھا کہ حکومت کے اس اعلامیہ کے حوالے سے انھیں معلوم نہیں جب وزیر کا درجہ دیا گیا تھا تو اس وقت بھی ان کے علم میں نہیں تھا۔

نیکٹا نے زرتاج گل کی بہن کی تقرری کو میرٹ کے مطابق قرار دے دیا

اسلام آباد: نیشنل کاؤنٹس ٹیررزم اتھارٹی کے سربراہ نے وزیر مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل کی اسسٹنٹ پروفیسر بہن شبنم گل کی تقرری کو میرٹ کے مطابق قرار دے دیا ہے۔

سربراہ نیکٹا نے شبنم گل کی نیکٹا میں تعیناتی سے متعلق خبروں کی وضاحت جاری کردی ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ نیکٹا میں گریڈ 17 سے گریڈ 19 تک ڈیپوٹیشن پر تعیناتی کے لئے مختلف وفاقی اور صوبائی محکموں سے 12 درخواستیں ملیں، 4 رکنی کمیٹی نے12 امیدواروں میں سے شبنم گل سمیت 6 امیدواروں کی تعیناتی کی منظوری دی۔ تاحال محترمہ شبنم گل کی نیکٹا میں تقرری نہیں ہوئی ہے، شبنم گل کی تقرری 19 ویں گریڈ میں ڈیپوٹیشن پر اسٹیبلشمنٹ کے ذریعے مانگی گئی ہے، ان کی خدمات ادارے میں دہشت گردی کے حوالے سے تحقیقی نوعیت کی ہوگی۔

نیکٹا کے سربراہ نے مزید کہا کہ میڈیا رپورٹس میں شبنم گل کی تقرری کو میرٹ کے برعکس کہا گیا ہے، یہ رپورٹس بے بنیاد ہیں، شبنم گل کی خدمات مکمل طور پر میرٹ پر مانگی گئی ہیں۔

دوسری جانب ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ وزیر مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل کی سفارش پر ہی نیکٹا نے ان کی بہن شبنم گل کی خدمات مانگی ہیں، شبنم گل کی خدمات نیکٹا کے حوالے کرنے کے لئے زرتاج گل کے پی ایس او نے لیٹر جاری کیا جس میں شبنم گل کو نیکٹا میں ڈیپوٹیشن پر بھرتی کرنے کا کہا گیا ہے۔

وزارت موسمیاتی تبدیلی کے خط میں کہا گیا ہے کہ شبنم گل کی نیکٹا میں تعیناتی کے لئے زرتاج گل کے ساتھ آپ کی ٹیلی فونک گفتگو ہوئی، اسی ٹیلی فونک گفتگو کے تناظرمیں آپ کو شبنم گل کی سی وی بھیجی جارہی ہے۔

آزادی اظہاررائے کے نام پرمسلمانوں کے جذبات کومجروح نہیں کیا جاسکتا، وزیراعظم

مکہ المکرمہ: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ اسلام کا دہشتگردی سے کوئی تعلق نہیں جب کہ مسلم دنیا کے خلاف ظلم وبربریت کا سلسلہ بند کیا جائے۔

اسلام کا دہشتگردی سے کوئی تعلق نہیں

او آئی سی کے 14 ویں سربراہ اجلاس میں وزیراعظم عمران خان نے خطاب میں کہا کہ کوئی مذہب معصوم انسانوں کے قتل کی اجازت نہیں دیتا، دہشتگردی کواسلام سے الگ سمجھنا ہوگا، اسلام کا دہشتگردی سے کوئی تعلق نہیں، مسلم دنیا کے خلاف ظلم وبربریت کا سلسلہ بند کیا جائے، نیوزی لینڈ کے واقعے نے ثابت کردیا کہ دہشتگردی کا کوئی مذہب نہیں، مسلمانوں کی سیاسی جدوجہد پردہشتگردی کا لیبل درست نہیں، مغربی دنیا مسلمانوں کے جذبات کا احساس کرے جب کہ دنیا کواسلامو فوبیا سے نکلنا ہوگا۔

بیت المقدس فلسطین کا دارالحکومت ہونا چاہیے

وزیراعظم نے کہا کہ نائن الیون کے بعد کشمیریوں اورفلسطینیوں پرمظالم ڈھائے گئے، نائن الیون سے پہلے زیادہ ترخودکش حملے تامل ٹائیگرزکرتے تھے، تامل ٹائیگرزکے حملوں کا تعلق کسی نے مذہب سے نہیں جوڑا، اسرائیل نے دہشتگردی کومعصوم فلسطینیوں کے خلاف استعمال کیا، جولان کی پہاڑیاں فلسطین کا حصہ رہنی چاہئیں، بیت المقدس فلسطین کا دارالحکومت ہونا چاہیے، مسلمانوں کی سیاسی جدوجہد کو دہشتگردی سے جوڑنا درست نہیں۔

کشمیریوں کوحق خودارادیت ملنا چاہیے

عمران خان نے کہا کہ کشمیری عوام آزادی کیلیے سیاسی جدوجہد کررہے ہیں، مسئلہ کشمیرکا اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل نا گزیرہے، کشمیریوں کوحق خودارادیت ملنا چاہیے، ہمیں معیاری تعلیم پرخصوصی توجہ دینا ہوگی، اسلامی دنیا کوسائنس وٹیکنالوجی پرتوجہ دینا ہوگی جب کہ اوآئی سی کے پلیٹ فارم سے سائنس وٹیکنالوجی کیلیے کام کرنا ہوگا۔

پیٹرول مہنگا ہونا نالائق وزیراعظم کی ایڈوانس عیدی کی قسط ہے، مریم اورنگزیب

لاہور: مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب کا کہنا ہے کہ پیٹرول کا 4 روپے 26 پیسے مہنگا ہونا نالائق اور نااہل وزیراعظم کی ایڈوانس عیدی کی قسط ہے۔

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر مریم اورنگزیب نے اپنے ردعمل میں کہا کہ جب سے نالائق اور ووٹ چور حکومت عوام پہ مسلط ہے ہر روز بُری خبر سننے کو ملتی ہے۔ عید سے کچھ دن پہلے پیٹرول کی قیمت میں اضافہ عوام کے ساتھ دشمنی کے مترادف ہے،جب ملک کو آئی ایم ایف میں گروی رکھ دیا جائے گا تو ہر روز عوام کو ایسا ہی تحفہ ملے گا۔

مریم اورنگزیب نے کہاکہ پیٹرول کا 4 روپے 26 پیسے مہنگا ہونا نالائق اور نااہل وزیراعظم کی ایڈوانس عیدی کی قسط ہے۔ 9 ماہ میں پیٹرول ، گیس اور بجلی کے نرخوں میں تاریخی اضافے نے عوام کی کمر توڑ دی ہے۔ پیٹرول اور ڈیزل کے مہنگے ہونے سے مہنگائی کے سونامی مزید میں اضافہ ہوگا۔ نالائق اور نااہل وزیراعظم کا بوجھ 22 کروڑ عوام کو اُٹھانا پڑ رہا ہے۔ اسی نالائقی، نااہلی اور بے حسی کے سوالوں کے جواب نہ ہونے کے خوف سے عمران صاحب پارلیمان کے اجلاس کو نہیں چلنے دیتے۔

Google Analytics Alternative