- الإعلانات -

ایپل نئے ’سکیورٹی فیچرز‘ کی تیاری کے لیے کوشاں

امریکی ذرائع ابلاغ کے مطابق آئی فون بنانے والی کمپنی ایپل ایسے نئے ’سکیورٹی فیچرز‘ کی تیاری کے لیے کوشاں ہے جن کا مقصد امریکی حکام کی جانب سے آئی فونز کو ہیک کرنے کی کوششوں کو ناممکن بنانا ہے۔

ایپل ملک کے وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف بی آئی کی جانب سے گذشتہ برس سان برنارڈینو میں عام شہریوں کو نشانہ بنانے والے حملہ آور رضوان فاروق کے فون کو ’ان لاک‘ کرنے کی درخواست ماننے سے تاحال انکار کر رہا ہے۔

نیویارک ٹائمز میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق ایپل کے انجینیئرز تحقیق کر رہے ہیں کہ آئی فونز کو ان کے مواد تک اس کے مالک کی مرضی کے بغیر رسائی کی کوششوں سے کیسے محفوظ رکھا جا سکتا ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ انھوں نے آئی فونز کے آپریٹنگ نظام کے ایک ایسے ’اپ گریڈ‘ پر کام شروع کر دیا ہے جس کے بعد اس طریقے سے آئی فون تک رسائی ممکن نہیں ہو سکے گی جس کے استعمال کی تجویز ایف بی آئی نے دی ہے۔

ایف بی آئی رضوان فاروق کے فون میں پہلے تو اس طرح کی تبدیلی چاہتی ہے جس سے تفتیش کار ڈیٹا مٹنے کے خطرے کے بغیر جتنی بار چاہیں پاس کوڈ کی آزمائشی کوشش کر سکیں۔

وہ یہ بھی چاہتی ہے کہ فون میں تیزی سے پاس کوڈ کی تبدیلی کے لیے کوئی راستہ ہموار کیا جائے تاکہ پاس کوڈ کے مختلف مرکبات آزمائے جا سکیں۔

ایف بی آئی ’بروٹ فورس‘ نامی طریقہ استعمال کرنا چاہتی ہے جس کے تحت اس وقت تک ان تمام مرکبات کا استعمال کیا جانا ہے جب تک فون کھل نہ جائے۔