- الإعلانات -

فیس بک کی نیوز فیڈ پر آپ کو بے تحاشہ پوسٹس ملیں گی جس سے فیس بک پریشان

فیس بک کی نیوز فیڈ پر آپ کو بے تحاشہ پوسٹس، لائیو ویڈیوز، ویب لنکس اور تصاویر سمیت دیگر شیئر مواد نظر آسکتا ہے، مگر کیا آپ کو یاد ہے کہ یہ سوشل نیٹ ورک درحقیقت لوگوں کے اسٹیٹس اپ ڈیٹس کے لیے متعارف کرایا گیا تھا؟

جی ہاں ایک رپورٹ کے مطابق فیس بک میں ذاتی مواد کی شیئرنگ کی شرح میں نمایاں کمی دیکھنے میں آئی ہے اور اس چیز نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ کو فکرمند کردیا ہے۔

2014 کے وسط سے 2015 کے آخر تک فیس بک پر مجموعی شیئرنگ کی شرح میں 5.5 فیصد کی کمی دیکھنے میں آئی ہے خصوصاً پرسنل اپ ڈیٹس کی شرح میں 21 فیصد کمی ہوئی۔

جب پرسنل اپ ڈیٹس کی بات کی جاتی ہے تو اس کا مطلب ہے اپنے خیالات کا اظہار، روزمرہ کی سرگرمیاں اور اپنی ذات سے متعلق دیگر مواد ہے۔

پرسنل پوسٹس کی شرح میں رواں سال بھی اب تک 15 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔

فیس بک کی انتظامیہ نے اس سے پریشان ہوکر پرسنل شیئرز کو بڑھانے کے لیے اپنی ٹیم کو ہدایات جاری کی ہیں، جس کے لیے دوستوں کے اسٹیٹس اپ ڈیٹس آپ کی نیوز فیڈ پر نمایاں پوزیشن پر لانا جیسے اقدام بھی شامل ہیں۔

فیس بک کو پریشانی اس لیے لاحق ہے کہ اس وقت متعدد سوشل نیٹ ورکس موجود ہیں، خاص طور پر سنیپ چیٹ اور واٹس ایپ نے لوگوں کی توجہ اپنی جانب زیادہ مرکوز کرا رکھی ہے (واٹس ایپ فیس بک کی ہی ملکیت میں ہے مگر خودمختار کام کرتی ہے)۔

ویسے تو پرسنل پوسٹس میں کمی کا مطلب فیس بک کا اختتام نہیں مگر یہ دیکھنا دلچسپی سے خالی نہیں ہوگا کہ فیس بک لوگوں کو اپنی ذاتی معلومات شیئر کرنے کے لیے کیا اقدامات کرتی ہے۔