- الإعلانات -

کورونا کے خلاف منفرد ڈیوائس نے دنیا کو دنگ کردیا

ماہرین نے جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے ایسی ڈیوائس تیار کرلی جو ابتدا میں ہی وائرس کی تشخیص میں مدد فراہم کرے گی جس سے کورونا کو دبوچنا آسان ہوجائے گا۔امریکی ریاست لاس ویگاس میں سی ای ایس ٹیکنالوجی نمائش کے دوران ‘بائیوبٹن’ نامی اس ڈیوائس کو پیش کیا گیا جو آغاز میں ہی مریضوں میں وائرس کی تشخیص میں مدد فراہم کرے گی، اپنے حجم کے لحاظ سے انتہائی چھوٹے ڈیوائس کو اسٹیکر کی طرح سینے پر چپکایا جاسکے گا۔

اس ڈیوائس کو ‘بائیو انٹیلی سنس’ نامی کمپنی نے تیار کیا ہے۔ سینے پر لگنے کے بعد یہ ڈیوائس پہننے والے کی دھڑکنوں کی رفتار، جسمانی درجہ حرارت، جسمانی سرگرمیوں، نیند اور سانس کی رفتار کو مسلسل مانیٹر کرے گی۔اس طرح چند دنوں میں ڈیوائس شہری سے متعلق ڈیٹا جمع کر لے گی اور پھر کورونا علامات سمیت دیگر بیماریوں کی جانچ میں ڈیٹا کام آئے گا، اس ڈیوائس کو بائیو انٹیلی سنس نے امریکن کالج آف کارڈیالوجی کے اشتراک سے تیار کیا ہے۔

روں سال مئی میں اسی ڈیوائس کے ذریعے امریکن کالج آف کارڈیالوجی کے عملے کی کوویڈ 19 اسکرینگ بھی کی جائے گی یہ وہ افراد ہوں گے جو کورونا ویکسی نیشن کے عمل سے گزریں گے۔ کمپنی کا کہنا ہے کہ اس ڈیوائس کے ذریعے دفاتر سمیت دیگر مقامات کو محفوظ بنایا جاسکتا ہے۔البتہ بائیو بٹن ابھی تحقیقی مراحل سے گزر رہی ہے عنقریب اسے استعمال کے لیے بھی پیش کیا جائے گا۔