- الإعلانات -

الیکٹرانک چپ کے ذریعے بندر بھی کمپیوٹر پر گیم کھیلنے لگے

مستقبل کے لیے نت نئے منصوبوں پر عمل پیرا امریکا کی ارب پتی کاروباری شخصیت اور امریکی ٹیکنالوجی کمپنی ٹیسلا کے سی ای او ایلن مسک کی نئی ایجاد نے دنیا بھر کو ایک بار پھر حیران کر دیا۔ ایلن مسک کی کمپنی (Neuralink) نیورا لنک کی جانب سے متعارف کردہ نئی ٹیکنالوجی دماغ کے لیے بلوٹوتھ سے آراستہ ایک چپ ہے جسے دماغ کے دونوں جانب نصب کیا جاتا ہے۔

ایلن مسک کی ٹیکنالوجی کمپنی کی جانب سے ایک ویڈیو شیئر کی گئی ہے جس میں بندر کو دماغ کا استعمال کرتے ہوئےکمپیوٹر گیم پونگ (pong)کھیلتے دیکھا جاسکتا ہے۔ ویڈیو میں 9 سالہ مکاک(ایک قسم کا لنگور) کو کمپیوٹر میں گیم کھیلتے دیکھا جا سکتا ہے ، کمپنی کے مطابق بندر کے دماغ کے دونوں اطراف ڈیوائسز لگائی گئیں۔

فی الحال نیورالنک نے مختصر ریسیور کے ذریعے کمپیوٹر سے ابلاغ کرنے والی اور دماغ میں نصب کی جانے والی چپ متعارف کروائی ہے جو اس سے قبل بھی جانوروں میں متعارف کروائی جا چکی ہے۔ ویڈیو میں بتایاگیا ہے کہ جانور نے اسٹرو (نلکی) کے ذریعے ’بنانا اسموتھی‘ کے لیے کمپیوٹر چلانا سیکھ لیا، ویڈیو میں بندر کو جوائے اسٹک کے ذریعے آن اسکرین کرسر چلاتے بھی دکھایا گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق نیورا لنک ڈیوائسز بندر کے برین موٹر کارٹیکس میں نصب کیے گئے 2000 الیکٹروڈ کے ذریعے دماغ کی نقل وحرکت کا ریکارڈ رکھتے ہوئے بازو کو منظم کرتا ہے۔ دوسری جانب ایلن مسک نے اپنے ایک پیغام میں کہا ہے کہ جلد انسانوں میں بھی تجربات کا اعلان کیا جائے گا۔ ایلن مسک نےایک پیغام میں کہا کہ کامیاب تجربات کےبعد ایسی پراڈکٹ جلد لائی جائیں گی جو فالج سے متاثر افراد کے لیےاسمارٹ فون استعمال کرنا ممکن بنا سکیں گی۔