- الإعلانات -

دنیا کے ‘ 8 ویں’ براعظم کے راز جاننے کا عمل شروع

ویسے تو بیشتر افراد دنیا کے ہر براعظم کا سفر نہیں کرپاتے مگر بہت کم ایسے ہوتے ہیں جو انٹارکٹیکا کو دیکھ پاتے ہیں یا وہاں جانا کسی چیلنج سے کم نہیں مگر اب ایک اور براعظم اس میں شامل ہوگیا ہے۔

اور وہ ہے دنیا کا ‘ 8 واں براعظم’ زی لینڈیا۔

انہوں نے زیرآب چار ہزار فٹ نیچے چھ مختلف مقامات پر ڈرل کرکے نمونے لیے اور آٹھ ہزار فٹ سے زائد چٹانی اور دیگر نمونوں کو حاصل کیا۔

سائنسدانوں کے مطابق نمونوں کے تجزیے سے عندیہ ملتا ہے کہ زی لینڈیا کے زیرآب حصے بھی لاکھوں، کروڑوں سال پہلے زمین کی سطح پر ہی موجود تھے اور اس زمانے میں سمندری درجہ حرارت بہت زیادہ تھا۔

ان کا اندازہ ہے کہ یہ براعظم 80 ملین سال پہلے آسٹریلیا اور انٹار کٹیکا سے الگ ہونے کے بعد مکمل طور پر زیرآب چلا گیا تھا۔

لگ بھگ تیس سے چالیس ملین سال پہلے پیسیفک رنگ آف فائر تشکیل پایا اور زیرلینڈیا کی سمندری تہہ ابھری۔

اب بھی اس براعظم کے دیگر رازوں کو جاننے کے لیے سائنسدانوں کی کوششیں جاری ہیں اور اسے مکمل طور پر کھوجنے کے لیے کافی وقت درکار ہوگا۔

جغرافیائی لحاظ سے دکھا جائے تو اس وقت دنیا میں چھ براعظم ہیں: افریقہ، انٹار کٹیکا، آسٹریلیا، یورایشیا، شمالی امریکا اور جنوبی امریکا، یور ایشیاءایسا جغرافیائی خطہ ہے جو کہ یورپ اور ایشیاءپر مشتمل ہے۔

49 لاکھ اسکوائر کلو میٹر کے ساتھ زی لینڈیا زمین کا سب سے چھوٹا براعظم ہوگا۔