- الإعلانات -

بنگلہ دیش، پاکستان کو شکست دے کر فائنل میں پہنچ گئی

میرپور: ایشیا کپ ٹی ٹوئنٹی کے اہم میچ میں بنگلہ دیش نے پاکستان کرکٹ ٹیم کو 5 وکٹوں سے شکست دے کر ٹورنامنٹ کے فائنل میں پہنچنے کا اعزاز حاصل کیا۔

میرپور کے شیر بنگلہ کرکٹ اسٹیڈیم میں کھیلے گئے میچ میں پاکستان کے کپتان شاہد آفریدی نے ٹاس جیت کر پہلے خود بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔

پاکستان نے مایوس کن انداز میں بیٹنگ کا آغاز کیا اور خرم منظور ایک رن بنا کر آؤٹ ہوئے جس کے بعد شرجیل خان 10 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے تاہم تیسرے آؤٹ ہونے والے بلے باز محمد حفیظ بدقسمت رہے جب انھیں امپائر نے وکٹ کے اوپر سے جاتی ہوئی گیند پر ایل بی ڈبلیو قرار دیا۔

ابتدائی تین بلے بازوں کے آؤٹ ہونے کے بعد پاکستان ٹیم کے لیے گزشتہ میچ میں ذمہ دارانہ بلے بازی کا مظاہرہ کرنے والے عمر اکمل اور سرفراز احمد نے بمشکل اسکور کو 28 رنز تک پہنچایا، عمر اکمل 11 گیندوں پر 4 رنز بنا کر اونچا شاٹ کھیلنے کی کوشش میں آؤٹ ہوئے۔

سرفرازاحمد اور شعیب ملک نے پانچویں وکٹ میں 70 رنز کی شراکت قائم کی اور پاکستان کا اسکور 98 رنز تک پہنچایا۔

شعیب ملک 41 رنز کی اننگز کھیل کر آؤٹ ہوئے۔

کپتان شاہد آفریدی نے اپنے مداحوں کو ایک دفعہ پھر مایوس کیا اور صفر پر پویلین واپس چلے گئے۔

سرفرازاحمد تیسرے نمبر پر بیٹنگ کرنے آئے اور بنگلہ دیشی باؤلرز کا ڈٹ کر مقابلہ کیا اور اپنی نصف سنچری مکمل کی۔

انور علی 13 رنز بنا کر آؤٹ ہونے والے آخری بلے باز تھے۔

سرفرازاحمد 58 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔

پاکستان نے مقررہ اوورز میں 7 وکٹوں کے نقصان پر 129 رنز بنائے۔

بنگلہ دیش کی جانب سے الامین حسین نے 3 اور عرفات سنی نے دو وکٹیں حاصل کیں۔

ہدف کے تعاقب میں بنگلہ دیش کو پہلا نقصان 13 رنز پر اٹھانا پڑا جب تمیم اقبال 7 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے تاہم سومیا سرکار نے ذمہ دارانہ بلے بازی کا مظاہرہ کیا اور شبیر رحمٰن کے ساتھ اسکور کو 46 رنز تک لے کر گئے مگر شبیر 14 رنز بنا کر شاہد آفریدی کی گیند پر بولڈ ہوگئے۔

سومیا سرکار 48 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے تو بنگلہ دیش کا اسکور 83 رنز تھا، محمد عامر نے یارکر گیند کے ذریعے ان کی وکٹیں اڑا دیں جبکہ مشفق الرحیم 12 رنز بنا کر شعیب ملک کا شکار بنے۔

15 اوورز کے اختتام پر بنگلہ دیش کا اسکور 4 وکٹوں کے نقصان پر 90 رنز تھا۔ شکیب الحسن 8 رنز بنا سکے عامر نے جب ان کی وکٹیں بکھیر دیں تو انھوں نے غصے میں اپنا بلاوکٹوں پر دے مارا تاہم امپائر سے معذرت بھی کرلی۔

کپتان مشرفی مرتضیٰ نے ذمہ دارانہ بلے بازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ٹیم کو جیت دلادی وہ 12 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے جبکہ محموداللہ نے 22 رنز بنا کر بنگلہ دیش کی جیت میں اہم کردار ادا کیا۔

بنگلہ دیش نے آخری اوور کی پہلی گیند میں 131 رنز بنا کر ہدف کو 5 وکٹوں کے نقصان پر عبور کرلیا۔

پاکستان کی جانب سے محمد عامر نے دو وکٹیں حاصل کیں۔

قبل ازیں پاکستان ٹیم میں ایک تبدیلی کی گئی متحدہ عرب امارات کے خلاف میچ میں ڈیبو کرنے والے نوجوان آل راؤنڈر محمد نواز کی جگہ انور علی کو ٹیم کا حصہ بنایا گیا۔

بنگلہ دیش ٹیم میں اوپننگ بلے باز تمیم اقبال اور عرفات سنی کی واپسی ہوئی جبکہ نورالحسن اور زخمی فاسٹ باؤلرمستیض الرحمٰن کو ٹیم میں شامل نہیں کیا گیا۔

دونوں ٹیموں کو فائنل تک رسائی کے لیے اس میچ میں کامیابی ضروری تھی اور میزبان ٹیم نے اس موقع سے بھرپور فائدہ اٹھایا اور پہلی دفعہ ایشیا کپ کےفائنل میں پہنچنے کا اعزاز پایا۔

بنگلہ دیش ٹیم نے گزشتہ میچ میں سری لنکا کو شکست دی تھی جبکہ پاکستان کو ہندوستان سے 5 وکٹوں سے ہار کا سامنا کرنا پڑا تھا تاہم متحدہ عرب امارات سے 7 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی تھی۔