- الإعلانات -

رپورٹ کیسے لیک ہوئی, ہیڈ کوچ وقار یونس نے وزیر کھیل کوشکایت لگا دی

رپورٹ کیسے لیک ہوئی ‘ قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ وقار یونس نے وزیر کھیل اور بین الصوبائی رابطہ ریاض کوشکایت لگا دی
رپورٹ لیک ہونے کی تحقیقات کی جائیں، کرکٹ کو بچانا ہے تو وزیر اعظم کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا‘میدان میں کھلاڑیوں کے درمیان کوآرڈینیشن کو بہتر بنانے کی ہرممکن کوشش کی ہے‘وقار یونس
رپورٹ لیک ہونا پی سی بی کی ناکامی ہے‘وقار یونس کی رپورٹ وزیر اعظم کو پیش کرونگا‘پاکستان میں آسٹریلیا کی طرز کی کرکٹ ہونی چاہیے‘ وزیر کھیل و بین الصوبائی رابطہ ریاض پیرزادہ کی بات چیت
لاہور (آئی این پی)رپورٹ کیسے لیک ہوئی؟وقار یونس کا غصہ کم نہ ہوا۔ شکایت لے کر وزیر کھیل اور بین الصوبائی رابطہ ریاض پیرزادہ کے پاس پہنچ گئے۔ تحفظات سے آگاہ کردیا۔ ریاض پیرزادہ نے کہا کہ وقار یونس کی رپورٹ وزیر اعظم کو پیش کریں گے۔ہیڈ کوچ وقار یونس دہائیاں لے کر وفاقی وزیر کھیل ریاض پیرزادہ کے پاس پہنچ گئے۔ گزشتہ روز رپورٹ لیک ہونے پر وقار یونس نے سخت ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے تحقیقات کا مطالبہ کیا تھا۔ اب اسلام آباد میں ہیڈ کوچ نے ریاض پیرزادہ کو بھی اپنے تحفظات سے آگاہ کردیا ہے۔وقار یونس نے کہا کہ رپورٹ لیک ہونے کی تحقیقات کی جائیں، کرکٹ کو بچانا ہے تو وزیر اعظم نواز شریف کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔ وقار یونس نے کہا کہ میدان میں کھلاڑیوں کے درمیان کوآرڈینیشن کو بہتر بنانے کی ہرممکن کوشش کی ہے۔وزیر کھیل ریاض پیرزادہ ملاقات میں وقار یونس کو تحقیقات کا یقین دلایا۔ بعد میں میڈیا سے گفت گو میں ریاض پیرزادہ نے کہا کہ رپورٹ لیک ہونا پی سی بی کی ناکامی ہے، وہ وقار یونس کی رپورٹ وزیر اعظم کو پیش کریں گے۔ ریاض پیرزادہ نے کہا کہ پاکستان میں آسٹریلیا کی طرز کی کرکٹ ہونی چاہیے۔