- الإعلانات -

پی سی بی سے سفارشی کلچر ختم نہ ہو سکا,پھر نیا ڈرامہ

پی سی بی سے سفارشی کلچر ختم نہ ہو سکا،گورننگ باڈی کے رکن شکیل شیخ کا بیٹا بغیر کوئی فرسٹ کلاس میچ کھیلے سپنرز کیمپ میں شامل۔
لاہور ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ میں شکست پر سب سے زیادہ انگلیاں سلیکشن کمیٹی پر اٹھیں لیکن لگتا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ نے اس ہار سے بھی کچھ نہیں سیکھا۔ پی سی بی نے مستقبل کے اسپنرز کی تلاش کے لئے 12 کھلاڑیوں کے ناموں کا اعلان کیا اور سب سے حیران کن نام گورننگ بورڈ کے رکن اور فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی سمیت متعدد کمیٹیوں کے ہیڈ شکیل شیخ کے بیٹے ارسل شیخ کا ہے جنہوں نے ایک بھی فرسٹ کلاس میچ نہیں کھیلا۔ یہ وہی کھلاڑی ہیں جنہیں بغیر کوئی ون ڈے میچ کھیلے انڈر نائنٹین ٹیم میں بھی شامل کر لیا گیا تھا۔دل دکھانے والی بات یہ ہے کہ ان بارہ کھلاڑیوں کا انتخاب اکیڈمی کوچ مشتاق احمد نے کیا۔ ڈومسیٹک میں اچھی کارکردگی دکھانے والے اسامہ میر، سلمان آغا، وسیم خان اور کاشف بھٹی کو نظر انداز کیا گیا ہے۔ بارہ کھلاڑیوں میں یاسر شاہ، ظفر گوہر، ارسل شیخ، محمد اصغر، کرامت علی، عماد وسیم، محمد نواز، بلال آصف، شاداب خان، سلمان فیاض اور احمد شفیق شامل ہیں۔ یہ کیمپ آٹھ سے چودہ اپریل تک جاری رہے گا اور پنٹگولر کپ میں اچھی کارکردگی دکھانے والے اسپنرز کو دوبارہ بھی کیمپ میں بلایا جائے گا۔