- الإعلانات -

لارڈز ٹیسٹ: پاکستان کی انگلینڈ کیخلاف بیٹنگ جاری

 لندن :  2010 میں سپاٹ فکسنگ سکینڈل کے بعد پاکستانی ٹیم کا یہ پہلا دورۂ انگلینڈ ہے ، کپتان مصباح الحق اس سیریز کو اپنے کریئر کا سخت ترین امتحان قرار دے رہے ہیں . پاکستان کی پہلے ٹیسٹ میں انگلینڈ کیخلاف ٹاس جیت کر بیٹنگ جاری ہے جس کے بعد اوپننگ بلے باز محمد حفیظ اور شان مسعود نے کھیل کا آغاز کیا، پاکستان کو 38 رنز پر پہلا نقصان اٹھانا پڑا ہے، آؤٹ ہونے والے کھلاڑی شان مسعود تھے جو سات رنز بنا کرس ووکس کی گیند پر وکٹوں کے پیچھے کیچ آؤٹ ہو گئے۔

کپتان مصباح الحق نے کہا کہ وکٹ بیٹنگ کیلئے سازگار نظر آ رہی ہے اسی لیے ہم ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کر رہے ہیں ۔ لارڈز گزشتہ کچھ عرصے سے بیٹنگ کیلئے سازگار تصور کی جاتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ اس وکٹ پر بھی بڑی تعداد میں رنز بننے کا امکان ہے ۔

انگلش کھلاڑیوں اور میڈیا کی نظریں قومی ٹیم کے فاسٹ بولر محمد عامر اور لیگ اسپنر یاسر شاہ پر مرکوز ہیں ۔

پاکستان کی 12 رکنی ٹیم میں کپتان مصباح الحق ، محمد حفیظ ، شان مسعود، اظہرعلی، یونس خان، اسد شفیق اور وکٹ کیپر سرفراز احمد ، یاسر شاہ، محمد عامر، وہاب ریاض، راحت علی اور عمران خان کے نام شامل ہیں۔

جب کہ انگلش اسکواڈ کپتان السٹرکک، الیکس ہیلز، جوئے روٹ، گیری بیلنس، جیمس ونس، جونی بریسٹو، معین علی، کرس ووکس، اسٹارٹ براڈ، جیک بال، اسٹیون فن اور ٹوبی رولینڈ پر مشتمل ہے ۔

اس سے پہلے پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان 1954ء سے 2016ء تک 23 ٹیسٹ سیریز کھیلی جا چکیں۔ 13 بار انگلینڈ میزبان بنا اور 8 سیریز پاکستانی سرزمین پر کھیلی گئیں۔ 2 سیریز کا میلہ یو اے ای کے میدانوں پر سجا۔ 8 میں پاکستان فاتح رہا اور 9 بار جیت انگلینڈ کا مقدر بنی جبکہ 6 سیریز برابر رہیں۔

یو اے ای کی دونوں سیریز میں پاکستان ٹیم سرخرو رہی۔ 23 سیریز میں دونوں ٹیموں کے درمیان 77 ٹیسٹ میچ کھیلے جا چکے۔ انگلینڈ نے 22 اور پاکستان نے 18 میں کامیابی سمیٹی، 37 میچ ڈرا ہوئے۔

پاکستان اور انگلینڈ کا لارڈز کے میدان پر 13 بار ٹاکرا ہو چکا۔ جیت نے 4 دفعہ انگلش اور 3 مرتبہ گرین شرٹس کے قدم چومے جبکہ لارڈز کرکٹ گراؤنڈ پر 6 ٹیسٹ میچوں کا نتیجہ نہ نکل سکا۔