- الإعلانات -

محمد حفیظ باﺅلنگ ایکشن کو کوچز کی مدد سے بہتر بنا کررہے ہیں.

محمد حفیظ نے اپنے ایک ٹوئیٹ میں کہا کہ وہ اپنے باﺅلنگ ایکشن کو بہتر بنانے کا کام گزشتہ نو ماہ سے نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں کوچز کی مدد سے کررہے ہیں۔اس سے پہلے ویب سائٹ کرک انفو نے اپنی ایک رپورٹ میں دعویٰ کیا تھا کہ 34 سالہ پاکستانی آل راﺅنڈر اپنے ایکشن کو درست کرنے پر کام نہیں کررہے جسے جولائی میں انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے غیر قانونی قرار دیا۔محمد حفیظ جنھوں نے 44 ٹیسٹ، 166 ون ڈے اور 64 ٹی ٹوئنٹی میچز میں پاکستان کی نمائندگی کی ہے، کے باﺅلنگ ایکشن کی رپورٹ نومبر 2014 میں نیوزی لینڈ کے خلاف ابوظبہی میں پہلے ٹیسٹ کے دوران ہوئی تھی اور آزاد تجزیے کے بعد انہیں باﺅلنگ کرنے سے روک دیا گیا۔تجزیے کے مطابق محمد حفیظ کی کہنی کا خم باﺅلنگ کے دوران 15 ڈگری سے زیادہ ہوتا ہے۔انہیں اپریل میں باﺅلنگ کے لیے کلیئر قرار دیا گیا مگر پارٹ ٹائم آف اسپنر کے ایکشن کی رپورٹ رواں برس جولائی میں سری لنکا کے خلاف ٹیسٹ کے دوران دوبارہ ہوئی۔آئی سی سی نے ایک سال کے لیے بین الاقوامی سطح پر آل راﺅنڈر کی باﺅلنگ پر پابندی عائد کردی تاہم انہیں ڈومیسٹک میچز میں باﺅلنگ کرنے کی اجازت دی گئی، تاہم اس کے لیے پی سی بی سے اجات لینا ضروری قرار دیا گیا۔پی سی بی کا دعویٰ ہے کہ محمد حفیظ کے باﺅلنگ ایکشن کی مانیٹرنگ باریک بینی سے کی جارہی ہے۔پی سی بی ڈائریکٹر ڈومیسٹک کرکٹ انتخاب عالم نے کرک انفو کو بتایا ” ایسا نہیں کہ ہم نے حفیظ کے ساتھ رعایت کی ہے، امپائرز کو اگر ان کے باﺅلنگ ایکشن پر شک ہوا تو وہ رپورٹ کرسکتے ہیں”۔ان کا کہنا تھا ” چونکہ قومی ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ ٹیلیویژن پر نشر ہورہا ہے اس لیے یہ ہمارے پاس حفیظ کو مانیٹر کرنے کا بہتر موقع ہے، اگر وہ اس لیول پر بھی رپورٹ ہوتے ہیں تو مزید تین ماہ کے لیے معطل ہوجائیں گے”۔خیال رہے کہ محمد حفیظ بین الاقوامی سطح پر بارہ ماہ کی پابندی کے حوالے سے دوبارہ باﺅلنگ تجزیے کی اپیل نہیں کرسکتے۔