- الإعلانات -

پاکستان آج سرفراز احمد کی قیادت میں انگلینڈ کا سامنا کرے گا-

انگلینڈ کے خلاف ٹیسٹ سیریز میں مصباح الحق اپنےامتحان میں سرخرو ہوئے۔ ٹیسٹ سیریز برابر ہونے کے بعد ون ڈے سیریز میں اظہر علی ناکام رہے۔ اب سرفراز احمد کی آزمائش ہے۔ ون ڈے کپتانی ملنے سے قبل سرفراز احمد کو انگلینڈ کے خلاف ایک اور ویسٹ انڈیز کے خلاف تین میچوں میں اپنی قائدانہ صلاحیتوں کا عملی مظاہرہ کرنا ہوگا۔

بدھ کو انگلینڈ اور پاکستان کے درمیان واحد ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل اولڈ ٹریفورڈ مانچسٹر میں ہورہا ہے۔ میچ پاکستانی وقت کے مطابق رات ساڑھے دس بجے شروع ہوگا۔ شاہد آفریدی کی جگہ کپتانی ملنے کے بعد سرفراز احمد پہلی بار پاکستانی ٹی ٹوئنٹی کی کپتانی کریں گے۔

سرفراز احمد کہتے ہیں کہ ملک کی کپتانی کرنا اعزاز کی بات ہے اور میں انگلینڈ کے ٹی ٹوئنٹی کا شدت سے منتظر ہوں۔ کوشش کروں گا کہ کپتان کی حیثیت سے مثبت کرکٹ کھیلوں۔ اپنی کارکردگی اور کپتانی سے پاکستان کرکٹ کو فائدہ پہنچائوں۔

سرفراز احمد نے کہا کہ ہماری ٹیسٹ ٹیم چھ سال سے سیٹ ہے۔ ون ڈے ٹیم میں مصباح الحق یونس خان اور شاہد آفریدی کی ریٹائر منٹ کے بعد ہم نئی ٹیم تشکیل دینے اور جدید کرکٹ سے ہم آہنگ ہونے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ہار سے نہیں ڈریں گے۔

لارڈز میں جیت سے دورے کا آغاز کیا تھا اب اختتام بھی جیت کے ساتھ کرنا چاہتے ہیں۔ دورے کو ہائی نوٹ کے ساتھ ختم کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شرجیل خان اور خالد لطیف پاکستانی اننگز شروع کریں گے۔ کپتان کی حیثیت سے پہلے میچ میں کوئی ریکارڈ نہیں بنانا چاہتا بلکہ اپنے ملک کو جتوانا چاہتا ہوں۔

سرفراز احمد نے کہا کہ پاکستان کرکٹ کے لئے نوجوان کھلاڑیوں کی شمولیت اچھی چیز ہے۔ بیٹنگ میں کسی دبائو کا شکار نہیں ہوں اپنا نیچرل گیم کھیلنا چاہتا ہوں۔ ہم ماضی کی جانب نہیں دیکھ رہے۔ اس وقت پاکستان کی رینکنگ ساتویں ہے ۔

ہم پاور ہٹرز کے ذریعے ٹیم کو اوپر لے جانا چاہتے ہیں۔ انگلش ٹیم اپریل میں کول کتہ میں آئی سی سی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی فائنل کے بعد دوسرا میچ کھیل رہی ہے۔ جون میں اس نے سری لنکا کو سائوتھمپٹن میں شکست دی تھی۔ انگلش ٹیم اولڈ ٹریفورڈ میں کبھی کوئی ٹی ٹوئنٹی میچ نہیں ہاری ہے۔ پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان 13ٹی ٹوئنٹی میچ ہوئے ہیں۔ پاکستان نے تین اور انگلینڈ نے9میں کامیابی حاصل کی۔ ایک میچ ٹائی رہا۔