- الإعلانات -

گلے شکوے دور، جاوید میانداد اور شاہد آفریدی میں صلح ہوگئی

کراچی: لیجنڈری کرکٹر جاوید میانداد نے شاہد آفریدی سے متعلق الزامات واپس لے لیے جس کے بعد دونوں میں گلے شکوے ختم ہوگئے اور صلح ہوگئی۔

قومی کرکٹ ٹیم کے لیجنڈری کرکٹر جاوید میانداد اور سابق کپتان شاہد آفریدی کے درمیان آج ملاقات ہوئی جس میں دونوں سابق کھلاڑیوں نے ایک دوسرے کے بارے میں کہے گئے الفاظ پر معذرت کی اور جاوید میانداد نے آفریدی پر میچ فکسنگ سے متعلق اپنے الزامات واپس لے لیے جس کے بعد دونوں کھلاڑیوں میں تمام گلے شکوے ختم ہوگئے اور دونوں کھلاڑیوں نے ایک دوسرے کو گلے لگایا اور مٹھائی کھلائی۔

اس موقع پر جاوید میانداد کا کہنا تھا کہ بڑی اچھی بات ہے شاہد آفریدی میرے ساتھ ہے اور یہ میرے چھوٹے بھائیوں کی طرح ہے جب کہ میں نے شاہد آفریدی سے متعلق جو کچھ کہا تھا وہ غصہ میں کہا تھا لہٰذا میں اپنے الفاظ واپس لیتا ہوں۔ شاہد آفریدی نے کہا کہ میں نے جاوید بھائی سے کبھی معافی کا مطالبہ نہیں کیا کیوں کہ یہ میرے بڑے ہیں لیکن یہ ان کا بڑا پن ہے کہ انہوں نے اپنے الفاظ واپس لے لیے کیوں کہ ان سے میرے اور میری فیملی کو دکھ ہوا تھا۔ انہوں نے کہا کہ اگر میری بات بھی آپ کو بری لگی جو یقیناً لگی ہوگی میں اس پر معافی چاہتا ہوں۔

جاوید میانداد اور شاہد آفریدی کےدرمیان ملاقات سینیٹر اقبال محمد علی کے گھر پر ہوئی اور سینیٹر نے دونوں قومی کرکٹرز کے درمیان صلح میں اہم کردار ادا کیا۔

واضح رہے کہ جاوید میانداد نے آفریدی پر کرکٹ سے ریٹائرمنٹ نہ لینے پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا تھا کہ بڑا کرکٹر وہی ہوتا ہے جو اپنے وقت پر کرکٹ چھوڑ دیتا ہے جب کہ شاہد آفریدی نے ایک پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ جاوید میانداد کو ہمیشہ سے پیسوں کا مسئلہ رہا ہے اس لیے وہ ایسی باتیں کرتے ہیں جس کے جواب میں لیجنڈری کرکٹر نے آفریدی پر بھارت میں ہونے والے ورلڈکپ 2011 کا سیمی فائنل فکس کرنے کا الزام لگایا تھا۔