- الإعلانات -

ہندوستانی کھلاڑیوں کو (پی ایس ایل) میں شرکت کی دعوت دی جائے۔ جاوید میاںداد

اسلام آباد: پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان جاوید میاںداد نے پی سی بی کو مشورہ دیا ہے کہ انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) میں پاکستانی کھلاڑیوں کو نظرانداز کرنے کے باوجود پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے ابتدائی سیزن کے لیے ہندوستانی کھلاڑیوں کوشرکت کی دعوت دی جائے۔

پی ایس ایل، ہندوستانی ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ کی طرح فرنچائز پر مشتمل ٹورنامنٹ ہے جو اگلے سال کے اوائل میں قطر یا متحدہ عرب امارات میں منعقد ہوگا۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی سے بات کرتے ہوئے میاں داد نے کہا کہ پی سی بی لیگ کے انعقاد کے لیے بہترین انتظامات کرے کیونکہ ملک کی ساکھ دائو پر لگی ہوئی ہے۔

انھوں نے کہا کہ "پی سی بی کھلاڑیوں کو ان کے معیار کے مطابق کیٹیگریوں میں تقسیم کرے، وہ تمام بین الاقوامی کھلاڑی جو لیگ کھیلنے کے مستحق ہیں، انھیں زبانی یا کسی اور طرح سے تصدیق کرنے کے بجائے معاہدے پر دستخط کرنے کے لیے کہنا چاہیے”۔

سابق عظیم بلے باز نے کہا کہ یہ ہمارے ملک کی ساکھ کا مسئلہ ہے اس لیے کچھ غلط نہیں ہونا چاہیے۔ دلچسپی رکھنے والے ہر کھلاڑی سے پہلے معاہدے پر دستخط کرنا چاہیے، اگر وہ آخری لمحات میں شرکت سے انکار کرتے ہیں تو لیگ پر برا اثر پڑے گا۔”

پی ایس ایل کا انعقاد فروری 2016 میں ہونے جارہاہے جو گزشتہ کئی سالوں کی کوششوں کے بعد منعقد ہوگی جہاں منتظمین کا کہنا ہے کہ وہ اب پی ایس ایل کے انعقاد میں کوئی کسر نہیں چھوڑیں گے۔

ٹی ٹوئنٹی لیگ دیگر ٹورنامنٹوں (آئی پی ایل اور بگ بیش )کی طرز کا ٹورنامنٹ ہے جو 2013 سے زیرغور تھا لیکن پی سی بی کو2014اور2015میں دومرتبہ اسے ملتوی کرنا پڑا جس کی وجہ اسپانسرز کی جانب سے عدم دلچسپی اور جگہ کا تعین نہیں ہونا تھا۔

لیکن پی سی بی ایگزیکٹیو کمیٹی کے چیف نجم سیٹھی کی سربراہی میں لیگ انتظامیہ اس کے انعقاد کیلئے انتھک کوششوں میں مصروف رہی۔

نجم سیٹھی کا کہنا ہے کہ اب ٹورنامنٹ میں مالی دلچسپیاں بڑھ گئی ہیں اور غیرملکی کھلاڑی بھی شامل ہورہے ہیں۔

میانداد نے کہاکہ پی سی بی کو چاہیے تھا کہ لیگ کے لوگو کی افتتاحی تقریب میں کاروباری تائیکون کو بھی دعوت دیتا کیونکہ پی ایس ایل کے لیے اشتہارات وقت کی اہم ضرورت ہیں۔

ان کاکہناتھا کہ "پی سی بی لیگ میں دلچسپی رکھنے والے بینکوں اور ملٹی نیشنل کمپنیوں کے صدور بھی بلا سکتا تھا۔”

پاکستان کی طرف سے ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے زیادہ رنز بنانے والے بلے باز نے کہا کہ ہو سکتا تھا کہ ان میں سے کوئی شخص پی ایس ایل کی ایک ٹیم خرید لیتا اور اسی طرح ٹیموں کی تعداد بھی بڑھائی جا سکتی ہے اور ٹورنامنٹ مزید بڑی شکل اختیار رک جاتا۔

پاک ہندوستان سیریز کے حوالے سے کئے گئے ایک سوال کے جواب میں میانداد کا کہناتھا کہ انھیں زیادہ توقعات نہیں تھیں۔ "جہاں تک سیریز کا تعلق ہے ہر کوئی جانتا ہے کہ کس نے کس کو دھوکا دیا۔”

میانداد نے کہاکہ میں دونوں ٹیموں کے درمیان سیریز پر بات کرنے کے بجائے بی سی سی آئی کے سربراہ جگموہن ڈالمیا کے انتقال پر ان کے دوستوں اور خاندان سے تعزیت کرنے کو اہمیت دوں گا۔

"میں بی سی سی آئی کے مرحوم سربراہ کے خاندان اوردوستوں سےدلی تعزیت کا اظہار کرتا ہوں۔ وہ بہترین انسان تھے اور پاکستانی کھلاڑیوں کی عزت کرتے تھے، ان کی موت سے کرکٹ میں بڑا خلا پیدا ہوا ہے۔