- الإعلانات -

محمد عامر کو ٹیم میں واپسی کیلئے طویل سفر طے کرنا ہو گا۔ چیف سلیکٹر

کراچی: قومی ٹیم کے چیف سلیکٹر ہارون رشید نے اسپاٹ فکسنگ میں ملوث محمد عامر کی عالمی کرکٹ میں فوری واپسی کی قیاس آرائیوں کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ٹیم میں واپسی کیلئے انہیں طویل سفر طے کرنا ہو گا۔انہوں نے سرکاری خبر رساں ایجنسی سے گفتگو میں کہا کہ عامر نے ابھی زیادہ ڈومیسٹک کرکٹ نہیں کھیلی اور ہم عالمی سطح پر واپسی سے قبل ان کی کارکردگی کا جائزہ لینا چاہتے ہیں۔واضح رہے کہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل اسپاٹ فکسنگ میں ملوث سلمان بٹ، محمد عامر اور محمد آصف کو 2 ستمبر سے ہر طرز کی کرکٹ کھیلنے کی اجازت دے چکی ہے۔ہارون رشید نے کہا کہ پہلے عامر کو فرسٹ کلاس اور پھر ڈومیسٹک کرکٹ کھیلنا ہو گی، اس کے بعد ہی ہم ان کے قومی ٹیم میں انتخاب غور کر سکیں گے۔انہوں نے واضح الفاظ میں کہا کہ عامر کے حوالے سے اس وقت بات کرنا قبل از وقت ہے۔چیف سلیکٹر ان افواہوں کی بھی تردید کی کہ پاکستان کرکٹ بورڈ ٹی ٹوئنٹی کپتان شاہد آفریدی کی زمبابوے کے خلاف واجبی کارکردگی پر پریشانی سے دوچار ہے۔زمبابوے کے خلاف پاکستان نے ٹی ٹوئنٹی سیریز تو اپنے نام کر لی لیکن نامور آل راؤنڈر دو میچوں میں صرف دو ہی رنز بنا سکے جبکہ دو میچوں میں وہ صرف ایک وکٹ لینے میں کامیاب رہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق پی سی بی اور کوچ وقار یونس نے ٹی ٹوئنٹی کپتان کی حالیہ فارم پر تشویش کا اظہار کیا تھا۔ہارون رشید نے ایسی تمام رپورٹس مسترد کرتے ہوئے کہا کہ آفریدی کی فارم کے حوالے سے ہمیں کوئی تشویش نہیں بلکہ اس کے بجائے اس وقت بورڈ کی توجہ نوجوان کھلاڑیوں پر مرکوز ہے۔انہوں نے کہا کہ ہر کھلاڑی کے کیریئر میں اتار چڑھاؤ آتا رہتا ہے اور مجھے یقین ہے کہ آفریدی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کریں گے۔