- الإعلانات -

شاہد آفریدی نے عمر اکمل کی حمایت کر د ی

لاہور :قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان شاہد آفریدی کی حمایت نے عمر اکمل کو بچالیا ۔ذرائع کے مطابق ٹی ٹونٹی ٹیم کے کپتان شاہد آفریدی کی طرف سے ٹیم مینجمنٹ سے عمر اکمل کے معاملے کو جلد حل کرنے اور ان کا نام مانگنے پر عمر اکمل کو متوقع سخت ایکشن سے نجات مل گئی ہے۔ قومی ٹی ٹونٹی ٹیم کے کپتان شاہد خان آفریدی نے کہا ہے کہ عمر اکمل کے معاملے میں اتنا کچھ تھا نہیں جتنا میڈیا نے اسے اچھالا ہے ،ٹیم مینجمنٹ سے عمر اکمل کے بارے میں ضرور بات کی ہے کہ اسکی تحقیقات کی جائیں اور اگر وہ کلیئر ہے تو اسے ٹیم کو دیا جائے تاہم اس کا فیصلہ کرنا بورڈ کی صوابدید ہے ، ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ سے قبل اچھا کمبی نیشن بنانا چاہتے ہیں اوراسی لئے مینجمنٹ سے کہا ہے کہ زیادہ تبدیلیاں نہ کی جائیں۔ ایل سی سی آئی گرانڈ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شاہد خاند آفریدی نے کہا کہ اگر نوجوان پروفیشنل کرکٹر ز کے ساتھ وقت گزارتے ہیں تو انہیں بہت کچھ سیکھنے کو ملتا ہے اور نوجوان کرکٹرز کو اس طرح کا ماحول دینا بہتر ہے اس لئے قومی کرکٹرز کو ہر طرح کی ڈومیسٹکٹ کرکٹ کھیلنی چاہیے۔ انہوں نے ٹی ٹونٹی اور چالیس اوورز کی کرکٹ کے سوال کے جواب میں کہا کہ اس میں فرق ضرور ہے لیکن خود کو پریکٹس میں رکھنا پڑتا ہے۔ میں ویسے بھی نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں پریکٹس کرتا ہوں اور آگے کرکٹ کھیلنے کے لئے یہ نا گزیر ہے۔ انہوں نے اپنی فیملی کی لاہور میں منتقلی کے حوالے سے سوال کے جواب میں کہا کہ یہ کافی مشکل صورتحال تھی کیونکہ اس میں بچوں کی تعلیم کا حرج ہوتا ہے لیکن کچھ پانے کے لئے کچھ کھونا پڑتا ہے۔ میں اپنے مستقبل کے حوالے سے کام کر رہا ہوں۔ انہوں نے عمر اکمل کے حوالے سے ٹیم مینجمنٹ سے بات کرنے کے سوال کے جواب میں کہا کہ میں نے ٹیم مینجمنٹ سے ضرور بات کی ہے کہ عمر اکمل کے معاملے کی تحقیقات کی جائیں اگر وہ غلط ہے تو ٹھیک ہے اور اگر وہ کلیئر ہے تو ٹیم کو دیا جائے۔ ویسے یہ اطلاعات آ رہی ہیں کہ معاملے میں اتنا کچھ تھا نہیں جتنا میڈیا نے اسے اچھالا ہے۔ لیکن میری خواہش ہے کہ آگے ورلڈ ٹی ٹونٹی آرہا ہے اور وہ ٹیم کا حصہ ہو کیونکہ ہم نے کمبی نیشن بنانا ہے تاہم حتمی فیصلہ کرنا بورڈ کی صوابدید ہے۔ انہوں نے رفعت اللہ کے حوالے سے سوال کے جواب میں کہا کہ اس نے اچھی پرفارمنس دی ہے اور میں ہمیشہ اس کے حوالے سے میڈیا میں بات بھی کرتا رہا ہوں۔ اس کی عمر کی بات کی جاتی ہے لیکن ٹیم میں جتنا فٹ وہ ہے اتنا کوئی اور کرکٹر نہیں اور ہمیں ویسے بھی ایک اچھے اوپنر کی تلاش تھی اور مجھے اعتماد ہے کہ وہ ضرور ڈلیور کرے گا۔ ورلڈ ٹی ٹونٹی کے لئے بہت سا کام کر چکے ہیں ہمیں ایک آدھ لڑکے کی ضرورت ہے ،انگلینڈ اور اس کے بعد نیوزی لینڈ کا دورہ ہے جس میں ہمیں یقینا اپنی ضرورت کے مطابق ضرور کوئی لڑکا مل جائے گا جسے ہم اپنی ٹیم کا حصہ بنائیں گے۔ انہوں نے احمد شہزاد کے حوالے سے سوال کے جواب میں کہا کہ وہ ون ڈے کا بہت اچھا کھلاڑی ہے۔ دورہ انگلینڈ میںاسے کیوں نہیں کھلا یا وہاں ٹیم مینجمنٹ ،کوچ اور کپتان ہیں اور ان کی منصوبہ بندی کیا ہے مجھے اس کا علم نہیں البتہ میں یہ بات ضرور دہراں گا کہ وہ اچھا اوپنر ہے۔ انہوں نے عمر گل کے حوالے سے سوال کے جواب میں کہا کہ یہ ہو نہیں سکتاکہ میں نے عمر گل کے بارے میں بات نہ کی ہو۔ عمر گل کی بڑی خدمات ہیں اور اسے نظر انداز نہیں کرنا چاہے اس کے علاوہ بھی چاہے کوئی بھی اسے لازمی چانس دینا چاہیے اور آج کل ڈومیسٹک میں اس کی اچھی فارم ہے۔