- الإعلانات -

‘محمد عامر کو دوسرا موقع دینا چاہیے’ جیفری بائیکاٹ

انگلینڈ کے سابق اوپننگ بیٹسمین جیفری بائیکاٹ نے محمد عامر کو بین الاقوامی کرکٹ میں ایک اور موقع دینے کی حمایت کردی۔جیفری بائیکاٹ کا کہنا ہے کہ پاکستان کو نوجوان باو¿لر محمد عامر کو اس کے ماضی کے باعث نہیں روکنا چاہیے۔محمد عامر اسپاٹ فکسنگ کے جرم میں پابندی کی سزا بھگت کر کرکٹ میں واپس آئے ہیں اور بنگلہ دیش پریمئر لیگ میں چٹاگانگ ویکنگز کی جانب سے شان دار کارکردگی کا مظاہرہ کررہے ہیں۔15 ایک روزہ اور 18 ٹی ٹوئنٹی میچوں میں پاکستان کی نمائندگی کرنے والے محمد عامر نے اپنا آخری ٹیسٹ میچ اگست 2010 میں انگلینڈ کے خلاف کھیلا تھا جہاں انھیں اسپاٹ فکسنگ کے الزام میں ٹیم سے باہر کیا گیا تھا۔جیفری بائیکاٹ نے پاکستانی ویب سائٹ پاک پیشن ڈاٹ نیٹ کو انٹرویو میں کہا کہ میں ہمیشہ قانون کی بالادستی پر یقین رکھتاہوں ، میچ فکسنگ اور اسپاٹ فکسنگ کرکٹ کو نقصان پہنچاتے ہیں، ان کی پابندی لمبی ہوسکتی تھی لیکن وہ اپنی سزا پوری کر چکے ہیں.ایک دفعہ انھوں نے قانون کے مطابق اپنی سزا پوری کی ہو، پھر معاشرے کو انہیں دوسرا موقع دینا چاہیے”۔ان کا کہنا تھا کہ اگر آپ کسی کو دوسرا موقع دیتے ہیں تو پھر کھیلنے کا بھرپور موقع دیں اور اگر ان کی کارکردگی معیار کے مطابق ہے تو انھیں پاکستان ٹیم میں بھی جگہ دیں”۔جیفری بائیکاٹ نے کہا کہ کسی کو بھی محمد عامر کے خلاف کوئی رنجش نہیں رکھنی چاہیے، محمد عامر سمیت دیگر کھلاڑیوں کو صرف میرٹ اور قابلیت کی بنیاد پر پاکستان ٹیم میں واپس آنا چاہیے۔