- الإعلانات -

سیپ بلاٹر اور پلاٹینی پر سات سال پابندی کا امکان

لندن: فٹ بال کی عالمی تنظیم فیفا کے معطل صدر سیپ بلاٹر اور نائب صدر مائیکل پلاٹینی پر غبن کا الزام ثابت ہونے کی صورت میں سات سال کی پابندی لگائے جانے کا امکان ہے۔فیفا کے اخلاقی تفتیش کاروں کی جانب سے غبن کے الزام پر فیفا کے معطل صدراور نائب صدرکو سزا کی سفارش کی ہے، 60 سالہ پلاٹینی پر الزام ہے کہ انہوں نے 79 سالہ سیپ بلاٹر سے 1.35 پاونڈ کی رقم لی۔رقم کی ادائیگی کے حوالے سے کوئی تحریری معاہدہ موجود نہیں ہے جو تعاون کے نام پر کی گئی ہو۔کمیٹی سزا کا اعلان کرسمس تک کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔بلاٹر اور پلاٹینی جو یورپین فٹ بال کی گورننگ تنظیم یوئیفا کے صدر بھی ہیں، دونوں 90 دنوں کی پابندی کا شکار ہیں، دونوں نے کسی غیر قانونی کام میں ملوث ہونے کی تردید کی ہے تاہم ان کا کہناہے کہ ان کے درمیان زبانی معاہدہ تھا۔دونوں کو انتظامی معاملات میں غفلت، جھوٹے اعداد وشمار اور اخلاقی کمیٹی کے ساتھ عدم تعاون کی پاداش میں اضافی الزامات کا سامنا ہے۔مقدمے کی سماعت جرمن جج ہینز جوکھیم ایکرٹ نے پیر کو کی تھی تاہم فیصلے کااعلان اگلے مہینے سے قبل نہیں کیا جائے گا۔فیفا کا کہنا ہے کہ ثبوتوں کا احتیاط سے جائزہ لیا گیا ہے لیکن فیصلے کی تفصیلات عام نہیں کی جائیں گے تاہم تفتیشی کمیٹی بلاٹر اور پلاٹینی دونوں پر سات سال کے لیے انتظامی معاملات پر پابندی کے حق میں ہے۔دوسری جانب پلاٹینی ابھی بھی اس امید میں ہیں کہ بلاٹر اگلے سال فروری میں ہونے والے انتخاب میں فیفا کے صدر منتخب ہوں گے۔