- الإعلانات -

اسرائیلی فوج نے نہتے فلسطینی نوجوان کو گولیاں مار کر شہید کردیا

اسرائیل کی قابض فوج نے مقبوضہ بیت المقدس میں نہتے فلسطینی نوجوان کو گولیاں مار کرشہید کردیا۔

عرب میڈیا کے مطابق مغربی کنارے میں 27 سالہ احمد ارکات اپنی دلہن بہن ‘جس کی آج رخصتی تھی’ اور والدہ کو بیوٹی پارلر سے لینے جارہا تھا کہ اسرائیلی فورسز نے کار میں سوار احمد کو کئی گولیاں ماردیں۔

اسرائیلی سیکیورٹی فورسز نے احمد پر الزام لگایا ہے کہ وہ اپنی گاڑی فوجیوں کی گاڑی سے ٹکرانا چاہتا تھا۔

رپورٹس کے مطابق قابض اسرائیلی فوجیوں نے احمد کو کئی گولیاں ماریں اور وہ ایک گھنٹے تک زخمی حالت میں گاڑی میں تڑپتا رہا، اس دوران فلسطینی ریڈکریسنٹ کی ایمبولینس اور امدادی اہلکاروں کو بھی روکے رکھا گیا جس کے باعث خون زیادہ بہنے سے احمد جاں بحق ہوگیا۔

احمد ارکات تنظیم آزادی فلسطین( پی ایل او) کے جنرل سیکرٹری صائب ارکات کا بھتیجا تھا، پی ایل او اور فلسطینی اتھارٹی نے واقعے کی مذمت کرتے ہوئے قتل کی بین الاقوامی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

لواحقین کے مطابق احمد ارکات کی بھی ایک ماہ بعد شادی طے تھی لیکن اسرائیلی فوجیوں نے ایک اور ہنستے بستے گھر کو اجاڑ دیا۔

دوسری جانب 2018ء میں غزہ کے ساحل پر ایک نہتے فلسطینی مچھیرے کو قتل کرنے کے الزام میں ایک اسرائیلی فوجی کو 45 دن تک کمیونٹی سروس کرنے کی سزا سنائی گئی ہے۔