- الإعلانات -

دُبئی میں بھارتی شہری کو لوٹنے اور زخمی کرنے والے 3 پاکستانی گرفتار

دُبئی میں تین پاکستانیوں کو ایک بھارتی شہری کے گھر میں گھس کر اس کی مار پیٹ کرنے اور قیمتی سامان لوٹنے کے جُرم میں گرفتار کر لیا ہے۔ ملزمان نے واردات کے دوران متاثرہ بھارتی کو لوہے کی سلاخ سے تشدد کا نشانہ بھی بنایا تھا۔ ملزمان نے اپنے چہرے چھپانے کے لیے سرجیکل ماسک پہن رکھے تھے۔ دُبئی کی عدالت میں مقدمے کی سماعت کے دوران استغاثہ نے بتایا کہ اگست 2020ء میں تین پاکستانی ملزمان بُر دُبئی کے ایک وِلا میں داخل ہو گئے اوروہاں مقیم بھارتی شہری کو لوہے کی سلاخ سے مار پیٹ کر اس کا قیمتی سامان لوٹ کر فرار ہو گئے تھے۔

33 سالہ بھارتی شہری نے بتایا کہ وہ رات کے وقت سو رہا تھا۔ اس کے ولا کی بجلی بھی کٹی ہوئی تھی جب تین آدمی اس کے ولا میں داخل ہو گئے۔جنہوں نے چہروں کو ماسک سے چھپا رکھا تھا۔ ایک شخص نے میرے چہرے کو ٹیپ سے بند کر دیا جبکہ ایک اور نے مجھے لوہے کی سلاخ سے مارنا پیٹنا شروع کر دیا۔ میں نے مزاحمت کی کوشش کی اور اسی دوران ایک شخص کے چہرے سے ماسک ہٹا کر اس کی شکل دیکھ لی۔

انہوں نے میرے منہ کو پلاسٹک بیگ سے ڈھانپ کر ٹیپ لگا دی اور پھر میرا لیپ ٹاپ، موبائل فون، کیش اور کریڈٹ کارڈز چھین کر فرار ہوگئے۔ ان کے فرار ہونے کے دوران ہی میں نے پلاسٹک بیگ چہرے سے ہٹا کر کمرے سے باہر گیا اور ان کو روکنے کی کوشش کی گئی۔ مگر وہ تین ہونے کے باعث میں کامیاب نہ ہو سکا۔ پولیس کی ایک پٹرولنگ ٹیم نے ایک ملزم کو گرفتار کر لیاہے جبکہ باقی ملزمان فی الحال مفرور ہے۔ عدالت نے گرفتار کیے گئے 25 سالہ پاکستانی کو تشدد اور ڈکیتی کے مقدمے میں فردِ جرم عائد کر دی ہے۔ اس مقدمے کی اگلی سماعت 9 دسمبر 2020ء کو ہو گی۔