- الإعلانات -

سعودی پولیس نے بزرگ افراد کی مدد کے بہانے انہیں لوٹنے والوں کو گرفتار کر لیا

سعودی پولیس نے انوکھے ڈھنگ کی وارداتیں کرنے والے دو غیر ملکیوں کو گرفتار کر لیا ہے جو اپنی دھوکے بازی کا نشانہ بزرگ افراد کو بناتے تھے۔ ریاض پولیس کے ترجمان میجر خالد الکریدیس نے بتایا کہ یہ ملزمان درجنوں وارداتوں کے دوران بزرگ افراد کے اے ٹی ایم کارڈز سے 7 لاکھ 20ہزار ریال کی خریداری کر چکے تھے۔اس کے علاوہ انہیں جان سے مارنے کی دھمکی دینے کے بعد بھاری نقدی، زیورات اور موبائل فونز بھی لوٹ چکے تھے۔ میجر خالد نے بتایا کہ ملزمان انتہائی ہوشیار تھے جن کے پاس مختلف بینکوں کے بیکار اے ٹی ایم کارڈز موجود تھے۔ یہ اے ٹی ایم مشینوں اور کیبن کے باہر کھڑے ہو کر ایسے بزرگوں کا انتظار کرتے، جنہیں اے ٹی ایم سے رقم نکلوانی نہیں آتی تھی۔

یہ بزرگوں کی مدد کے بہانے ان کی مطلوبہ رقم نکال کر ان کے حوالے تو کر دیتے تھے، مگر ان کا کارڈ واپس کرنے کی بجائے اپنے پاس موجود فالتو کارڈ انہیں تھما دیتے تھے اور پھر بعد میں بزرگوں کے ہتھیائے گئے کارڈز سے تسلی سے لاکھوں درہم کی شاپنگ کرتے تھے۔ اس نوعیت کی درجنوں وارداتیں رپورٹ ہونے کے بعد ریاض پولیس نے ملزمان کا سراغ لگانے کے لیے ایک خصوصی ٹیم تشکیل دی جس نے ان دونوں غیر ملکی ملزمان کو گرفتار کر لیا۔

ایک ملزم کا تعلق یمن سے جبکہ دوسرے کا تعلق افریقی ملک صومالیہ ہے۔ ملزمان کے قبضے سے مختلف بینکوں کے 37 پرانے کارڈز، 31 ہزارریال کیش، سونے کے زیورات اور 10 موبائل فون بھی پکڑے گئے جو انہوں نے مختلف وارداتوں کے دوران لوٹے تھے۔سعودی پولیس نے خبردار کیا ہے کہ کوئی بھی اکاؤنٹ ہولڈر اپنے اکاؤنٹ یا اے ٹی ایم کارڈ کی تفصیلات کسی اجنبی کو فراہم نہ کرے اور نہ اپنا بینک کارڈ کسی کے حوالے کریں، اس غیر ذمہ دارانہ حرکت سے عمر بھر کی پونجی ضائع ہو سکتی ہے۔