- الإعلانات -

کفیل خروج نہائی نہ لگائے تو کیا کریں؟

ریاض: جوازات کا کہنا ہے کہ کفیل کے ساتھ خروج نہائی کے مسائل پر وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود آبادی کے شعبہ تنازعات کے حل سے رجوع کیا جا سکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق آجر و اجیر کے تنازعے کے بارے میں ایک شخص نے جوازات کے ٹوئٹر پر دریافت کیا کہ ان کا کفیل خروج نہائی نہیں لگا رہا، جب کہ اقامہ بھی ایکسپائر ہو چکا ہے، جب کہ میرا پیشہ گھریلو ڈرائیور کا ہے، اس صورت حال میں کیا کروں؟

جوازات نے کہا وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود آبادی کے شعبہ تنازعات کے حل سے رجوع کریں، جہاں موجود اہل کار کو درخواست دی جائے تاکہ وہ معاملات کا جائزہ لینے کے بعد فیصلہ صادر کر سکے۔

واضح رہے سعودی عرب میں غیر ملکی کارکنوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے خصوصی ادارہ قائم ہے، جسے عربی میں ’ھیئہ تسویۃ الخلافات العمالیہ‘ کہا جاتا ہے۔
مذکورہ شعبہ وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود آبادی کا ذیلی ادارہ ہے، جہاں آجر و اجیر کے مابین ہونے والے اختلافات کو حل کیا جاتا ہے۔

قانون کے مطابق غیر ملکی کارکنوں کے اقامہ کی سالانہ بنیاد پر تجدید کرنا اسپانسر یعنی کفیل کی ذمہ داری ہوتی ہے، کفیل اس امر کا پابند ہے کہ وہ اپنی زیر کفالت کارکنوں کے اقاموں کی بر وقت تجدید کو یقینی بنائیں، جب کہ اقامہ ایکسپائر ہونے کی صورت میں کارکن کا حق ہے کہ وہ وزارت افرادی قوت کے متعلقہ ادارے میں شکایت درج کروائے، جس میں اقامہ ایکسپائر ہونے کے علاوہ تنخواہ یا واجبات کی عدم ادائیگی کے معاملات بھی پیش کیے جا سکتے ہیں۔

لیکن یاد رہے اگر کارکن اسپانسر کے پاس سے فرار ہو جاتا ہے تو معاملات اس کے خلاف ہو جاتے ہیں جس کے بعد کارکن کی جانب سے دائر کیے جانے والا مقدمہ اہمیت نہیں رکھتا اس لیے اس امر کا خیال رکھا جائے کہ اسپانسر کے پاس ہی کام کریں اور قانونی طور پر معاملے کو حل کیا جائے۔
جوازات کے ٹوئٹر پر ایک شخص نے دریافت کیا کہ ٹریفک چالان جو کہ 150 ریال ہے، کی عدم ادائیگی پر خروج نہائی لگ سکتا ہے؟

جوازات کا کہنا تھا کہ غیر ملکی کارکن کے ذمہ کسی بھی خلاف ورزی ریکارڈ ہونے کی صورت میں جب تک چالان ادا نہ کیا جائے، سسٹم میں خروج وعودہ یا فائنل ایگزٹ نہیں لگایا جا سکتا، غیر ملکی کارکن کے سرکاری معاملات کی انجام دہی کے لیے لازمی ہے کہ جوازات کے سسٹم میں کارکن کی فائل صاف ہو اور کسی قسم کی خلاف ورزی ریکارڈ پر نہ ہو۔