بین الاقوامی

سیلفی کے جنون نے 16 سالہ لڑکی کی جان لے لی

دبئی: دبئی میں نوجوان لڑکی 17 ویں منزل پر اپنے فلیٹ کی کھڑکی سے سیلفی لینے کی کوشش میں توازن قائم نہیں رکھ سکی اور نیچے گر کر ہلاک ہوگئی۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق دبئی میں شیخ زاید شاہراہ پر واقع کثیر المنزلہ رہائشی عمارت کے 17 ویں منزل کے فلیٹ پر مقیم ایشیائی لڑکی نے کھڑکی کے نزدیک کرسی رکھی اور اس پر چڑھ کر اس طرح سیلفی لینے کی کوشش کی جس سے عقب میں پورا شہر نظر آجائے۔ اس کوشش میں لڑکی لڑکھڑائی اور سیدھے نیچے آن گری۔

17 ویں منزل سے نیچے گرنے پر جواں سال لڑکی کی موت موقع پر ہی واقع ہوگئی۔ اہل خانہ نے پولیس کو بتایا کہ لڑکی کو سیلفی لینے کا شوق تھا اور روز ہی کوئی نہ کوئی سیلفی لے کر رشتہ داروں کو بھیجتی رہتی تھی اس بار بھی شہر کے حسین منظر کو اپنے عقب میں عکس بند کرنے کی کوشش میں کھڑکی سے نیچے گر گئی۔

واضح رہے کہ سیلفی کے جنون میں جان گنوا دینے کا یہ پہلا واقعہ نہیں دنیا بھر میں ایسے متعدد واقعات پیش آچکے ہیں، ایک نوجوان عقب سے آتی تیز رفتار ٹرین کی سیلفی لینے کی کوشش میں ٹکر لگنے سے ہلاک ہو گیا تھا، اسی طرح ایک نوجوان لڑکی اپنے والد کی پستول کے ساتھ سیلفی لینے کے دوران غلطی سے گولی چل جانے پر ہلاک ہوگئی تھی۔

کردوں کے ترک فوج پر راکٹ حملے میں ایک اہلکار جاں بحق، 5 زخمی

انقرہ: شمالی شام میں کرد جنگجوؤں نے ترک فوج کے قافلے پر راکٹ حملہ کردیا جس کے نتیجے میں ایک فوجی جاں بحق اور 5 زخمی ہوئے۔ 

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق شمالی شام میں جنگ بندی کے باوجود ترک فوج اور جنگجوؤں کے درمیان جھڑپوں کے اکا دکا واقعات کا سلسلہ جاری ہے، ترک فوج نے کردوں کے زیر تسلط علاقوں میں آپریشن کیا جب کہ جواب میں کرد جنگوؤں نے ترک فوج پر راکٹ داغے۔

ترک محکمہ دفاع کے ترجمان نے اپنے بیان میں بتایا کہ راس العین میں ترک فوج کے قافلے پر کرد جنگجوؤںکے راکٹ حملے میں ایک اہلکار جاں بحق اور 5 زخمی ہوگئے۔ زخمیوں کو ملٹری اسپتال میں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے جن میں سے 2 اہلکاروں کی حالت نازک ہے۔

ترک فوج نے جوابی کارروائی میں کردوں کے علاقے میں سرچ آپریشن کا آغاز کردیا ہے تاہم کسی قسم کی جھڑپ یا گرفتاری کی کوئی اطلاع نہیں ملی ہے۔ کرد جنگجوؤں کا کہنا ہے کہ ترک فوجیوں نے سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے آپریشن جاری رکھا ہوا ہے۔

واضح رہے کہ ترک صدر طیب اردگان کے حکم پر شمالی شام میں ترک فوجیوں نے پیش قدمی کرتے ہوئے 9 دن تک کردوں کے علاقوں میں کارروائی جاری رکھی تاہم امریکا کی مداخلت پر ترکی اور کردوں کے درمیان امن معاہدہ طے پاگیا تھا جس میں ترکی نے جنگجوؤں کو 5 دنوں میں علاقہ خالی کرنا تھا۔

 

صدر ٹرمپ مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش پر قائم ہیں لیکن بھارت تیار نہیں، امریکا

واشنگٹن: امریکی حکام نے واضح کیا ہے کہ صدر ٹرمپ اب بھی مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے پاک و ہند کے درمیان ثالثی کا کردار ادا کرنے کی پیشکش پر قائم ہیں تاہم بھارت راضی نہیں۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکا کی جانب سے ایک بار پھر مسئلہ کشمیر پر پاکستان اور بھارت کے درمیان ثالثی کا کردار ادا کرنے کی پیشکش کی ہے اور حریت رہنماؤں سمیت دیگر سیاسی رہنماؤں کی جبری گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے فوری رہائی کا مطالبہ کیا ہے۔

امریکی وزرات خارجہ کے ایک اعلیٰ افسر نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر پر پاکستان اور بھارت چاہئیں تو صدر ٹرمپ اب بھی اپنی ثالثی کی پیشکش پر قائم ہیں تاہم بھارت مسئلہ کشمیر پر کسی کی ثالثی نہیں چاہتا۔

دوسری جانب جنوبی ایشیا سے متعلق امریکی قائم مقام نائب وزیر خارجہ ایلس ویلز کا کہنا ہے کہ لاکھوں افراد کو بنیادی حقوق سے محروم نہیں رکھا جا سکتا۔ امریکا کشمیر میں سیاسی اور معاشی سرگرمیوں کی بحالی کے لیے روڈ میپ کی تیاری کے لیے فریقین پر دباؤ ڈالتا رہے گا۔

امریکا کی جانب سے یہ بیان اس وقت سامنے آیا ہے جب گزشتہ روز ہی اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کے ترجمان نے میڈیا سے گفتگو میں مسئلہ کشمیر کو مقامی آبادی کی امنگوں اور مذاکرات کے ذریعے حل کرنے کی ضرورت پر زور دیا تھا۔

بھارت میں انتہا پسندوں کے ہاتھوں مسلم جماعت کے کارکن کا بہیمانہ قتل

کیرالہ: بھارت میں گھات میں بیٹھے مسلح افراد نے نماز پڑھنے کے لیے مسجد جانے والے نوجوان کو قتل کردیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست کیرالہ میں انڈین یونین مسلم لیگ کے 38 سالہ کارکن اسحاق کو مسجد جاتے ہوئے مسلح افراد نے گھیر کر بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا اور فائرنگ کرکے نوجوان کو شہید کرکے فرار ہوگئے۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ اسحاق کو شدید زخمی حالت میں اسپتال لے جایا گیا تاہم دوران علاج خون زیادہ بہہ جانے کے باعث وہ خالق حقیقی سے جاملا۔ پولیس نے انڈین پینل کوڈ کی شق 302 کے تحت مقدمہ درج کرلیا۔

انڈین یونین مسلم لیگ کے ترجمان نے اپنے کارکن کے قتل کا ذمہ دار کمیونسٹ پارتی آف انڈیا کو ٹھہرایا ہے تاہم پولیس نے مقدمہ نامعلوم افراد کے نام درج کرلیا ہے۔ علاقے میں کشیدگی کے باعث مزید نفری تعینات کردی گئی ہے۔

واضح رہے کہ بھارت میں مودی سرکار کے دوبارہ برسراقتدار آنے کے بعد سے مسلمانوں اور اقلیتیوں کے پر مشتعل ہجوم کے بہیمانہ تشدد کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے اور ایمنسٹی انٹرنیشنل کے مطابق رواں برس کے پہلے 6 ماہ میں نفرت آمیز 181 واقعات رونما ہوئے ہیں۔

ایتھوپیا میں نوبل انعام یافتہ وزیراعظم ابی احمد کیخلاف مظاہروں میں 67 افراد ہلاک

ادیس ابابا: ایتھوپیا میں وزیراعظم ابی احمد کیخلاف ہونے والے پُر تشدد مظاہروں میں 5 پولیس اہلکاروں سمیت 67 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق ایتھوپیا میں وزیراعظم ابی احمد کے خلاف سماجی کارکن جوار محمد کی اپیل پر ہونے والے مظاہروں نے تشدد کی صورت اختیار کر لی ہے اور اسی دوران نسلی جھڑپوں کا آغاز ہوگیا ہے جس میں 67 افراد ہلاک ہوگئے۔ ہلاک ہونے والوں میں 5 پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔

Ethopia Protest 2

حال ہی میں امن کی کاوشوں پر نوبل کا انعام حاصل کرنے والے وزیراعظم ابی احمد کیخلاف عوامی مظاہروں کی قیادت سماجی کارکن جوار احمد کر رہے ہیں، جنہوں نے ابی احمد پر مخالفین کے ساتھ آمرانہ رویہ رکھنے اور سیکیورٹی فورسز کے ذریعے دھمکانے اور تشدد کرانے کا الزام بھی عائد کیا۔

Ethopia Protest 3

ایتھوپیا کے دارالحکومت ادیس ابابا اور اورمیا میں مشتعل مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپوں کا سلسلہ جاری ہے، ہزاروں لاٹھی بردار شہری جوار احمد کی حمایت میں سڑکوں پر نکل آئے ہیں۔ سرکاری عمارتوں اور کئی گھروں کو جلانے کی اطلاعات بھی ہیں۔

Ethopia Protest 4

ملک میں انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والی تنظیموں نے شہریوں سے پُرامن رہنے کی اپیل کی ہے جب کی حکومت کی جانب سے حالات کو قابو میں کرنے کے لیے مزید نفری تعینات کردی گئی ہے۔

روسی فوجی کی اپنے ہی ساتھیوں پر فائرنگ سے 8 اہلکار ہلاک

ماسکو: سائبیریا میں روسی فوج کے سپاہی نے اپنے ہی ساتھیوں پر اندھا دھند فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں 8 اہلکار ہلاک اور 2 زخمی ہوگئے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق منگولیا کی سرحد کے نزدیک چھاؤنی میں روسی فوج کے اہلکار نے ذہنی دباؤ اور گھریلو مسائل کی وجہ سے اپنے ہی ساتھیوں پر فائرنگ کرکے 8 اہلکاروں کو قتل کردیا جب کہ دو شدید زخمی ہیں۔

ہلاک اور زخمی ہونے والوں کو قریبی فوجی اسپتال منتقل کردیا گیا ہے جب کہ حملہ آور اہلکار کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔ واقعے کی تحقیقات کے لیے انکوائری کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے۔ فائرنگ کرنے والے اہلکار کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے۔

نریندرمودی جمہوریت اور معیشت دونوں کو نقصان پہنچا رہے ہیں، امریکی جریدہ

واشنگٹن: امریکی جریدے دی اکانومسٹ کا کہنا ہے کہ نریندر مودی جمہوریت اور معیشت دونوں کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔

امریکی جریدے دی اکانومسٹ کا کہنا ہے کہ بھارت میں اس وقت نہ صرف جمہوریت بلکہ معیشت بھی بد سے بد تر ہو رہی ہے، مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی گرفتاریاں اور مظالم، اس کے ساتھ ساتھ آسام میں ہزاروں مسلمانوں کی بھارتی شہریت ختم کر دینا، بھارتی تاریخ میں مسلمانوں کی بد ترین نسل کشی ہے۔

امریکی جریدے کے مطابق بھارت میں ٹیکس دینے والوں کی شرح بھی خطرناک حدتک کم ہوئی ہے اور یہاں کاروں، موٹرسائیکلوں کی خرید میں بھی 20 فیصد تک کمی ہوئی ہے جب کہ ستمبر کے آخر تک کاروبار میں سرمایہ کاری میں 88 فیصد تک کمی ہوئی۔

دا اکانومسٹ نے مودی حکومت کی پالیسیوں پر مزید کہا کہ بھارت میں کچھ بینک اور دیگر قرض دینے والے ادارے بحران کا شکار ہیں، معیشت نا اہل اور برے طریقے سے چلائی جارہی ہے۔ ایسی صورتحال کے باوجود مغرب کا اکثر تجارتی طبقہ مودی کی حمایت کررہاہے جو لمحہ فکریہ ہے۔

برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نے قبل از وقت انتخابات کی تجویز پیش کردی

لندن: برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نے 12 دسمبر کو قبل از وقت انتخابات کروانے کی تجویز پیش کردی۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نے ہر حال میں 31 اکتوبر کو یورپی یونین سے انخلا کی اپنی ضد کو ختم کرتے ہوئے اپوزیشن جماعتوں کے سامنے 12 دسمبر کو قبل از وقت پارلیمانی انتخابات کرانے کی تجویز رکھ دی ہے۔

برطانوی وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ بریگزٹ ڈیل پر پارلیمان کی تقسیم اور برطانوی سیاستدانوں میں پائے جانے والی بے چینی کا اب واحد حل نئے انتخابات ہی رہ جاتے ہیں۔ جس کے لیے میں 12 دسمبر کو قبل از وقت انتخابات کرانے کو تیار ہوں جو کہ 2022 میں ہونے تھے۔

برطانوی حزب اختلاف کی جماعت لیبر پارٹی کے سربراہ نے بورس جانسن کی پیشکش پر کہا کہ پہلے بریگزٹ ڈیل میں التوا کے فیصلے پر یورپی یونین کے ردعمل کا انتظار ہے اس کے بعد ہی کوئی فیصلہ کریں گے تاہم کئی چھوٹی جماعتوں نے قبل از وقت انتخابات کی حمایت کی ہے۔

واضح رہے کہ یورپی یونین سے انخلا کے معاملے پر تاحال برطانوی پارلیمان کسی نتیجے پر نہیں پہنچ سکی ہے جب کہ عوام کے درمیان بھی اس معاملے پر کافی تضاد اور تقسیم پائی جاتی ہے۔ سابق وزیراعظم تھریسامے کو بھی اس مسئلے پر مستعفی ہونا پڑا تھا۔

Google Analytics Alternative