پاکستان صحت

وزیر صحت عبدالقادر پٹیل قومی مینٹل ہیلتھ کے ڈویلپمنٹ سنٹر کا افتتاح کریں گے

پاکستان میں پبلک سیکٹر میں پہلی بار بچوں کیلئے قومی آٹیزم اور مینٹل ہیلتھ کے ڈویلپمنٹ سنٹر کا قیام عمل میں لایا جا رہا ہے وزیر

پاکستان میں پبلک سیکٹر میں پہلی بار بچوں کیلئے قومی آٹیزم اور مینٹل ہیلتھ کے ڈویلپمنٹ سنٹر کا قیام عمل میں لایا جا رہا ہے وزیر صحت جمعرات کے روزسنٹر کا افتتاح کریں گے اٹیزم سنٹر پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنس میں قایم کیا جارھا ھے پاکستان میں اپنی نوعیت کا یہ پہلا اٹیزم سنٹر ہوگا ایک اندازے کے مطابق پاکستان میں ساڑھے چار لاکھ افراد اٹیزم کا شکار ہیں وفاقی وزیر صحت نے کہا کہ سب سے بڑا مسئلہ یہ ھے پاکستان میں اس بیماری کی تشخیص نہیں ہوتی ھے
اگر تشخیص ہو پاتی ھے تو اسکے علاج کی مینجمنٹ اور سہولیات موجود نہیں ہیں کئی بار اس بیماری کی غلط تشخیص بھی ہو جاتی ھے اٹیزم اور مینٹل ہیلتھ ڈویلپمنٹ سنٹر کے اندر مریضوں کی تشخیص مشورے مینجمنٹ اور علاج کی سہولیات موجود ہوں گی پہلے مرحلے میں یہ سنٹر (بیرونی ) یعنی اوٹ پیشنٹ مریضوں کے علاج کی تشخیص اور علاج کرے گا
وفاقی حکومت کا صحت کے شعبے میں بہتری کیلئے یہ ایک انقلابی اقدام ھے حکومت صحت کے شعبے میں بہتری کیلئے بڑے پیمانے پر اصلاحات کر رہی ھے صحت کے شعبے میں طبی سہولیات کی فراہمی کیلئے ہر ممکن اور عملی اقدامات کو یقینی بنارھے ہیں حکومت سماجی شعبے اور عوام کی فلاح وبہبود کیلئے بھر پور موثر اقدامات کو یقینی بنارہی ھے عبدالقادر پٹیل

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے