- الإعلانات -

مغربی ممالک،زیکا وائرس سے بچنے کیلئے برقعہ کا استعمال

اسلام آباد: مغربی ممالک مسلمان خواتین کے پردے کو ماضی میں شدید تنقید کا نشانہ بناتے رہے ہیں اور اب بھی آئے روز ہم لوگ مغربی ممالک میں پردے پر پابندی، کیسز اور جرمانوں کی خبریں سنتے رہتے ہیں۔ لیکن اب قدرت نے ان سے ایسا انتقام لیا ہے کہ انہیں بھی پردے کی قدر معلوم پڑ گئی ہے۔ زیکا وائرس نے اس وقت دنیا کے بیشتر ممالک کو بری طرح اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے اور حکومتیں اس کی روک تھام کے لیے مختلف اقدامات کر رہی ہیں۔ ایسے میں برازیل کے ڈاکٹروں نے خواتین کو اس وائرس سے بچنے کے لیے برقعہ پہننے اور پورے بازں والے لباس زیب تن کرنے کا حکم دے دیا ہے۔ زیکا وائرس چونکہ مچھر کے کاٹنے سے پھیلتا ہے اس لیے ڈاکٹر پردے کے ذریعے خواتین کو مچھروں کے کاٹے جانے سے محفوظ رکھنا چاہتے ہیں تاکہ وہ زیکا وائرس سے بچ سکیں اور خود بھی صحت مند رہیں ا ور ان کے ہاں پیدا ہونے والے بچے بھی صحت مند ہوں۔ واضح رہے کہ یکم فروری سے ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن زیکا وائرس کے معاملے پر عالمی ہیلتھ ایمرجنسی کا اعلان کر چکی ہے۔ اور اگر یہی حال رہا تو مستقبل قریب میں دنیا کو خطرناک ترین صورتحال کا سامناکرنا پڑ سکتا ہے۔