- الإعلانات -

مقبوضہ کشمیر، ٹاڈا عدالت نے یاسین ملک اور دیگر رہنمائوںکے خلاف غیر منصفانہ طورپرفرد جرم عائد کردی

 مقبوضہ کشمیر میں جموں کی ایک ٹاڈا عدالت نے جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک اور دیگر آزادی پسند کشمیری رہنماؤں کے خلاف لگ بھگ 30 سال قبل درج جعلی مقدمے میں فرد جرم عائد کردی ہے۔کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق ٹاڈا عدالت کے جج سباش سی گپتا نے محمد یاسین ملک ، علی محمد میر ، منظور احمد صوفی ، جاوید احمد میر ، محمدسلیم ، جاوید احمد زرگر اور شوکت احمد بخشی کو دفاع کا موقع دیے بغیران پر فرد جرم عائد کردی ۔فرد جرم 30 سال قبل بھارتی فضائیہ کے چار اہلکاروں کے قتل پر عائد کی گئی ہے۔جج نے دہلی کی تہاڑ جیل میں نظربند محمد یاسین ملک اور دیگر کشمیری رہنماؤں کو مقدمے کی آزادانہ طورپر پیروی کا موقع فراہم کیے بغیر کہاکہ بظاہر سی بی آئی نے ملزمان کے خلاف عائد الزامات کے حق میںدستاویزی اور زبانی شواہد پیش کئے ہیں۔ قانونی ماہرین نے ٹاڈا عدالت کے تبصرے کو کشمیری رہنماؤں کے خلاف بھارتی عدلیہ کا متعصبانہ رویہ قرار دیاہے