- الإعلانات -

آنکھوں کی سوزش کا علاج

لندن: دنیا میں لاکھوں کروڑوں افراد سرخ، بہتی ہوئی اور سوزش والی آنکھوں کے شکار ہوتے ہیں اور اب ایک فنگس ( پھپھوند) سے بنے ڈراپس سے ان کا مؤثر علاج کیا جاسکتا ہے۔

سائنسدانوں کے مطابق ناروے کی مٹی میں پائے جانے والے ایک اہم عنصر ’’سائیکلوسپورن‘‘ جسم کے امنیاتی نظام کو دباتے ہوئے آنکھوں کی جلن اورسوزش کو فوری طورپر دورکرتا ہے، یہ کیمیکل ایک طرح کی پھپھوند سے حاصل کیا گیا ہے۔ 1960 کے عشرے میں سائنسدانوں نے ناروے میں ہارڈینگرویڈا پہاڑ کی مٹی سے حاصل کیا گیا تھا جسے اس وقت ٹولی پوکلیڈئیم انفلیٹم کا نام دیا گیا ہے، مٹی میں موجود پھپھوند میں سے بننے والے اس پہلے آئی ڈراپ کو آئیکروِس کا نام دیا گیا ہے۔

ماہرین کے مطابق آنکھوں سے نمی غائب ہونا ایک خطرناک عمل ہے جس سے نابینا ہونے کا خدشہ بھی ہوتا ہے کیونکہ یہ کیراٹائٹس کی وجہ بن سکتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہےکہ تجرباتی طور پر 246 مریضوں کی آنکھوں میں پھپھوند سے بنے قطرے ٹپکائے گئے اور ان کی آنکھوں میں بہت بہتری دیکھی گئی جب کہ ان کئ آنکھوں کے عدسے (قرنیہ) بھی متاثر نہیں ہوا۔

اس دوا کی افادیت دیکھتے ہوئے نیوکاسل یونیورسٹی کے ماہرِ چشم کا کہنا ہے کہ دوا سے مریضوں پرحقیقی تبدیلی دیکھنے میں آئی ہے، پہلی مرتبہ آنکھوں کی خشکی اور کیراٹیٹیس کے مرض سے پریشان لوگوں کے لئے لائیسنس یافتہ دوا بننے سے دنیا بھر میں اس مسئلے کو حل کرنے میں مدد ملی ہے۔