- الإعلانات -

ایمپائر کے فیصلے سےجان بھی جا سکتی ہے دنیا کا پہلا افسوسناک فیصلہ

علی گڑھ  کرکٹ کے میدان میں بعض اوقات ایمپائرز کے فیصلے کھلاڑیوں کو پسند نہیں آتے اور وہ غصے میں آ جاتے ہیں لیکن اصول و ضوابط کے مطابق چار و ناچار انہیں ایمپائرز کا فیصلہ تسلیم کرنا پڑتا ہے۔ فیصلہ در ست ہو یا غلط اس کا اثر کسی بھی ٹیم کی ہار یا جیت پر پڑ سکتا ہے لیکن بھارت میں ایک کرکٹ میچ کے دوران ایمپائر کے فیصلے نے اس کی ایک بہن کی جان لے لی اور تین کو ہسپتال پہنچا دیا۔
بھارتی خبر رساں ادارے ”انڈیا ٹائمز“ کے مطابق علی گڑھ سے 20 کلومیٹر دور واقع ایک قصبے جارارا نے آئی پی ایل کی طرز پر اپنے اردگرد کے قصبوں کی ٹیموں کے درمیان ”جے پی ایل“ کے نام سے ٹورنامنٹ کا انعقاد کرایا جو 14 مئی سے 30 مئی تک کھیلا گیا اور جیتنے والی ٹیم کیلئے 5,100 روپے کا انعام بھی رکھا گیا تھا۔ ٹورنامنٹ اپنی مقررہ تاریخ پر شروع ہوا اور توقعات کے مطابق میچز ہوتے رہے۔ 28 مئی کو جارارا اور باریکی کے درمیان کھیلے گئے میچ میں ایمپائر راج کمار نے اہم موقع پر ایک گیند کو نوبال قرار دیدیا اور یہی فیصلہ اس واقعہ کی وجہ بن گیا۔
سندیپ پال نامی ایک کھلاڑی ایمپائر کمار کے اس مبینہ غلط فیصلے پر خوش نہیں تھا اور یہ فیصلہ واپس لینے کی بات کی لیکن جب کمار نہ مانا تو اس نے دھمکی کی کہ یہ فیصلہ اسے بہت مہنگا پڑے گا اور اس کے بدلے وہ اپنے کسی گھر والے کو کھو دے گا لیکن کمار نے سندیپ کی بات پر توجہ نہ دی۔ مغربی اترپردیش کے علاقوں میں کھیلوں کے دوران لڑائی جھگڑے اور مارنے کی دھمکیاں دینا معمول کی بات ہے اور شائد اسی لئے کمار نے بھی اس دھمکی کو ایک کان سے سن کر دوسرے سے نکال دیا اور یہی اس کی غلطی بن گئی۔
سندیپ پال یہ جانتا تھا کہ اس کے گھر کے افراد کس وقت کھیتوں میں جاتے ہیں۔ 29 مئی کو اس نے کمار کی 4 بہنوں کو راستے میں روک کر کولڈ ڈرنکس پیش کیں۔ چاروں لڑکیاں پال کو جانتی تھیں اس لئے انہوں نے بغیر ہچکچاہٹ انہیں پی لیا جس کے کچھ ہی دیر بعد کمار کی ایک بہن ہلاک ہو گئی جبکہ اس کی دیگر تین بہنوں کو تشویشناک حالت میں ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق کمار کی چاروں بہنوں کو جو زہر دیا گیا ہے اسے ”اینٹو“ کہا جاتا ہے جس کی بوتل بھی جائے وقوعہ سے برآمد کر لی گئی ہے۔