- الإعلانات -

عمان نے غیر ملکی ملازمین کے لیے اہم رعایت کا اعلان کر دیا

کورونا وبا کے دوران دُنیا بھر میں بہت سے اہم فیصلے کیے جا رہے ہیں۔ خلیجی ممالک میں بھی کورونا وبا کے دوران غیر ملکی کارکنان کے حوالے سے اہم فیصلے لیے گئے ہیں جن میں سے کچھ ان کے لیے فائدہ مند اور کچھ نقصان دہ ثابت ہوئے ہیں۔ عمان نے بھی لیبر قوانین میں اہم ترامیم کا اعلان کر دیا ہے جس میں تارکین وطن ایک بڑی خوش خبری سُنائی گئی ہے کہ آئندہ سے انہیں اپنا کفیل یا آجر بدلنے کے لیے این او سی لینے کی ضرورت نہیں ہو گی۔عمان نے مملکت میں مروجہ لیبر قوانین میں ترامیم کا اعلان کر دیا ہے۔ عمانی وزیر خارجہ بدر البوسعیدی نے بتایا کہ عمانی حکومت نے لیبر قوانین میں ترمیم کا بھی اعلان کیا ہے، اس کے علاوہ نئے ٹیکسز کے نفاذ کیا جائے گا اور طویل المیعاد سبسڈی ختم کر دی جائے گی۔

یہ بات انہوں نے بحرین میں انٹرنیشنل انسٹی ٹیوٹ فار اسٹریٹجک اسٹڈیز کے زیر اہتمام منامہ ڈائیلاگ کانفرنس سے خطاب کے دوران بتائی۔ بدر البوسعیدی کا کہنا تھا کہ عمان میں ملازمت پیشہ افراد کے لیے اہم تبدیلیاں کی جا رہی ہیں جن میں سے ایک یہ ہے کہ تارکین مزدوروں کو نئے کفیل یا آجر کے ساتھ کام کرنے کے لیے این او سی یعنی اجازت نامے کی ضرورت نہیں ہو گی۔ یہ شرط عنقریب منسوخ کر دی جائے گی۔ عمانی حکومت نے کورونا کے باعث مقامی آبادی کے معاشی مشکلات کا شکار ہونے کے باعث اومانائزیشن پالیسی کی منظوری دے دی ہے جس کے تحت سرکاری ملازمتوں میں غیر ملکیوں کو ہٹا کر ان کی جگہ عمانی شہریوں کو تعینات کیا جائے گا۔